'غزہ میں اقوام متحدہ کی روح مردہ ہو چکی ہے': ترک صدر ایردوآن

ایردوآن کی حالیہ اسرائیلی حملے کے خلاف مشترکہ کارروائی میں ناکامی پر مسلم اکثریتی ممالک پر تنقید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ترکیہ کے صدر رجب طیب ایردوآن نے بدھ کے روز اقوامِ متحدہ کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا اور غزہ میں تازہ ترین ہلاکت خیز اسرائیلی حملوں کے بعد "اسلامی دنیا" سے ردِعمل کا مطالبہ کیا۔

ایردوآن نے اپنی پارٹی اے کے پی کے قانون سازوں کو بتایا، "اقوامِ متحدہ اپنے عملے کی حفاظت بھی نہیں کر سکتا۔ آپ عمل کے لیے کس چیز کا انتظار کر رہے ہیں؟ غزہ میں اقوامِ متحدہ کی روح مر چکی ہے۔"

ایردوآن کے تبصرے ایسے وقت میں سامنے آئے جب اقوامِ متحدہ کی سلامتی کونسل نے منگل کے روز رفح کے مغرب میں بے گھر افراد کی خیمہ بستی پر ایک مہلک اسرائیلی حملے پر تبادلۂ خیال کے لیے اجلاس منعقد کیا۔ اس حملے میں غزہ کے شہری دفاع کے ایک اہلکار کے مطابق 21 افراد ہلاک ہوئے۔

ترک رہنما نے اسرائیلی حملے کے خلاف مشترکہ کارروائی کرنے میں ناکامی پر ساتھی مسلم اکثریتی ممالک پر بھی تنقید کی۔

85 ملین آبادی والے مسلم اکثریتی ملک کے قائد نے اپنی پارٹی اے کے پی کے قانون سازوں کو بتایا، "میں اسلامی دنیا سے کچھ کہنا چاہتا ہوں: آپ مشترکہ فیصلہ کرنے کے لیے کس چیز کا انتظار کر رہے ہیں؟"

انہوں نے کہا، "اسرائیل صرف غزہ کے لیے نہیں بلکہ پوری انسانیت کے لیے خطرہ ہے۔"

اسرائیل کے غزہ میں "نسل کشی" کرنے کے الزام کو دہراتے ہوئے ایردوآن نے مزید کہا، "کوئی بھی ریاست اس وقت تک محفوظ نہیں ہے جب تک اسرائیل بین الاقوامی قانون کی پیروی نہ کرے اور خود کو بین الاقوامی قانون کا پابند محسوس نہ کرے۔"

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں