غزہ کشیدگی کے درمیان برازیل نے اسرائیل سے اپنا سفیر واپس بلا لیا: سفارتی ذرائع

اسرائیل کا شدید ردِ عمل، برازیلین صدر کو "ناقابلِ قبول شخصیت" قرار دے دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ایک سفارتی ذریعے نے بدھ کو اے ایف پی کو بتایا کہ برازیل نے اسرائیل سے اپنا سفیر واپس بلا لیا ہے اور وہ فوری طور پر کوئی متبادل سفیر تعینات نہیں کرے گا۔ اس اقدام سے غزہ میں اسرائیل کی جنگ پر دونوں ممالک کے درمیان کشیدگی میں مزید اضافہ ہوا ہے۔

برازیل کے صدر لوئیز اناسیو لولا ڈا سلوا نے فروری میں اسرائیلی حکومت پر "نسل کشی" کا الزام لگایا تھا تو اس تنازعہ کی بنا پر برازیل اور اسرائیل کے درمیان تعلقات تلخ ہو گئے ہیں۔

اسرائیل نے شدید ردِ عمل کا اظہار کرتے ہوئے برازیل کے رہنما کو "ناقابلِ قبول شخصیت" قرار دیا۔

اسرائیل نے قبل ازیں جنوبی امریکی ملک کے سفیر فریڈریکو میئر کو یروشلم میں یاد واشم ہولوکاسٹ میموریل سینٹر میں ایک میٹنگ کے لیے طلب کیا تھا جس کے بارے میں برازیلین ذرائع نے کہا تھا کہ "میئر کو ذلت آمیز سلوک کا نشانہ بنایا گیا۔"

جواب میں برازیل نے میئر کو مشاورت کے لیے واپس بلایا اور اس کے عوض برازیلیا میں اسرائیل کے نمائندے کو طلب کر لیا۔

ذرائع نے کہا کہ میئر کی اسرائیل "واپسی" کے لیے شرائط پوری نہیں کی گئیں۔

اس دوران اسرائیل میں برازیل کی نمائندگی سفارت کار فابیو فاریاس کریں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں