ٹرینر کے ہاتھ سے چھوٹنے والے کتے نے 93 سالہ خاتون مار ڈالی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فرانسیسی پبلک پراسیکیوشن نے جمعے کو بتایا کہ ملک کے جنوب میں ایک کتے کے حملے میں 93 سالہ خاتون کی ہلاکت کے بعد فرانسیسی حکام نے جانوروں کی افزائش کے ایک مرکز میں دو خواتین ملازمین پر غیر ارادی قتل کا الزام عائد کیا ہے۔

ڈوگو ارجنٹینونسل کے کتوں کی افزائش کے ایک مرکز میں کام کرنے والی ایک 18 سالہ ٹرینی نیمز شہر کے شمال مغرب میں واقع ایک قبرستان میں تین کتوں کے ساتھ چہل قدمی کر رہی تھی کہ ایک کتا اس سے بھاگ کر ایک بزرگ خاتون پر چڑھ دوڑا اور اسے کاٹ ڈالا۔

ڈوگو ارجنٹینو کتوں کی تصویر۔ [فائل فوٹو]

ڈوگو ارجنٹینو کتے نے 93 سالہ خاتون کو ہلاک کر دیا جو کینول وائی ارجنٹیر گاؤں میں اپنے ایک رشتہ دار کی قبر پر جا رہی تھی۔

سرکاری وکیل نے کہا کہ سینٹر کے 43 سالہ ڈائریکٹر اور ٹرینر پر غیر ارادی قتل کا الزام عائد کیا گیا ہے تاہم 18 سالہ خاتون کو رہا کر دیا گیا ہے۔

ڈائریکٹر اور اس کے جڑواں 19 سالہ بیٹوں پر کرائم سین کے ساتھ چھیڑ چھاڑ کا الزام لگایا گیا جب وہ مقامی حکام کے پہنچنے سے پہلے کتے کو گاؤں سے باہر لے گئے۔

ڈوگو ارجنٹینو کتے قد میں بڑے ہوتے ہیں اور ان کے جبڑے مضبوط اور سخت ہوتے ہیں۔ان کا وزن 30 سے 45 کلوگرام کے درمیان ہوتا ہے۔

ٹرینی نے ابتدائی طور پر پولیس کو بتایا کہ جس کتے نے خاتون پر حملہ کیا وہ ایک "آوارہ" تھا، لیکن بعد میں اس نے وضاحت کی کہ سینٹر کے ڈائریکٹر اور اس کے دو بیٹوں نے "اپنی ذمہ داری سے بچنے کے لیے" یہ بیان دینے کے لیے اس پر دباؤ ڈالا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں