امریکہ نے سلامتی کونسل سے جوبائیڈن روڈ میپ کی حمایت کا مطالبہ کر دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

امریکہ نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں پیر کے روز ایک ایسا مسودہ پیش کیا ہے جس میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ صدر جوبائیڈن کے اسرائیل اور حماس کے درمیان جنگ بندی کے لیے پیش کردہ خاکہ کی حمایت کی جائے۔ یہ خاکہ امریکی صدر نے پچھلے ہفتے پیش کیا تھا اور حماس پر زور دیا تھا کہ اسے قبول کر لے۔

امریکہ سفیر برائے اقوام متحدہ لنڈا تھامس گرین فیلڈ نے اس موقع پر کہا ' اس 'روڈ میپ کی کئی رہنما اور حکومتیں حمایت کر چکی ہیں ۔ ان میں خطے کے رہنما اور حکومتیں بھی شامل ہیں۔'

اے ایف پی کے مطابق مسودہ جسے اس کے نمائندے نے دیکھا ہے اس میں روڈ میپ کی حمایت کی گئی ہے۔ نیز حماس سے اسے فوری اور غیر مشروط طور پر تسلیم کرنے کا کہا گیا ہے۔

واضح رہے صدر جوبائیڈن نے جمعہ کو پیش کردہ اپنے اس روڈ میپ کے تین مراحل بتائے تھے۔ خیال رہے جوبائیڈن نے یہ روڈ میپ جمعہ کے روز پیش کیا تھا ۔ اس کے تین مراحل میں جنگ بندی معاہدے کو حتمی شکل دی جائے گی۔ جنگ روکی جائے، یرغمالی رہا کیے جائیں اور غزہ کی تعمیر نو اس طرح کی جائے کہ حماس کی حکومت باقی نہ رہے۔

تاہم امریکہ اور اسرائیل کے درمیان اس امر پر اس وقت اختلاف پیدا ہو گیا جب نیتن یاہو نے کہہ دیا کہ اسرائیل اپنے جنگی اہداف پورے کیے بغیر جنگ بندی نہیں کرے گا۔ جن میں اہم ترین ہدف حماس کو مکمل تباہ کرنا ہے۔ اسرائیلی میڈیا میں اس روڈ میپ کی جزئیات پر کئی سوال بھی اٹھائے گئے ہیں۔

اس سے پہلے پیر کے روز ہی وائٹ ہاؤس کی طرف سے کہا گیا تھا صدر جوبائیڈن نے امیر قطر سے کہا ہے کہ معاہدے کی راہ میں ایک ہی رکاوٹ ہے اور وہ حماس ہے، اس لیے اس پر دباؤ ڈالا جائے کہ وہ تسلیم کر لے۔

جبکہ حماس نے پچھلے ہفتے اس روڈ میپ کو مثبت انداز سے دیکھنے کا کہا ہے لیکن ابھی تک حماس نے باضابطہ طور پر کوئی رد عمل ظاہر نہیں کیا ہے۔ نیز ابھی ثالثی کرنے والے ملکوں قطر ، مصر یا امریکہ نے مذاکرات کے کسی نئے دور کا اعلان نہیں کیا ہے۔

ادھر سلامتی کوونسل میں جمعہ کے روز غزہ اور رفح میں جنگ بندی کےحق میں پیش کردہ مسودے یا امریکی مسودے پر ووٹنگ کے حوالے سے ابھی کوئی تاریخ مقرر نہیں کی گئی ہے۔

اس سے پہلے سلامتی کونسل میں امریکہ غزہ کی بندی کے لیے کم از کم تین قرار دادیں ویٹو کر چکا ہے۔ اس نے آخری قرارداد جسے کثرت رائے سے ارکان نے منظور کر لیا تھا ماہ مارچ میں ویٹو کیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں