ترکیہ: ڈاؤن سنڈروم میں مبتلا طالب علم پر تشدد میں ملوث استاد پر مقدمہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

ترکیہ کے دارالحکومت انقرہ میں اسپیشل ایجوکیشن اسکول کے ایک استاد نے ڈاؤن سنڈروم میں مبتلا 17 سالہ طالب علم کو شدید زدوکوب کیا۔ تاہم اس واقعے کی عدالتی تحقیقات شروع ہوگئی ہیں جس پر تشدد میں ملوث ٹیچر کو قید کی سزا ہوسکتی ہے۔

ایک ویڈیو کلپ میں یہ انکشاف ہوا ہے کہ استاد اپنے پیروں سے طالب علم پر ٹھوکر مار رہا ہے۔اس کے بعد اسے زمین پر پھینک دیا اور اسے دوبارہ لات ماری۔ اس کے بعد طالب علم کو فرش پرگھیسٹا۔

بچے کو زدو کوب کرنے کے واقعے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر جنگل کی آگ کی طرح پھیلی اور اس پر شہریوں کی طرف سے سخت رد عمل سامنے آیا

دوسری طرف اسکول کے سکیورٹی کیمروں نے اس واقعے کو ریکارڈ کیا۔ معلوم ہوا کہ اسی اسکول میں کام کرنے والی ٹیچر کی اہلیہ نے بچے پر تشدد کو دیکھا مگر وہ خاموشی سے پاس سے گذر گئی۔

اس کے دوست سے جھگڑا

تفصیلات کے مطابق اسپیشل ایجوکیشن ٹیچر نے ڈاؤن سنڈروم میں مبتلا طالب علم والدہ کو بلایا اور کہا کہ "آپ کے بیٹے نے آج مجھے شرمندہ کیا۔ یہ اپنے دوست کے ساتھ لڑتا رہا ہے‘‘۔

لیکن جب ماں اپنے بیٹے کو اسکول سے واپس لینے کے لیے آئی تو اس نے اس کے جسم پر زخموں کے نشانات دیکھے۔ اس نے اس سے پوچھا کہ یہ نشانات کیسے ہیں۔ر اس نے اسے بتایا کہ "استاد اسے تشدد کا نشانہ بنایا ہے‘‘۔

ٹانگوں سے پکڑ کر گھیسٹا

والدہ کے اصرار پر اسکول میں لگے کیمروں کا جائزہ لیا گیا اور جب ریکارڈنگ کی جانچ کی گئی تو معلوم ہوا کہ ڈاؤن سنڈروم کے شکار طالب علم کو اس کے استاد نےبری طرح مارا پیٹا ہے۔

فوٹیج میں وہ لمحات دکھائے گئے جب استاد نے اپنے پاؤں طالب علم کے پاؤں پر رکھے، اسے زمین پر کھینچا اور اسے لات ماری۔

ماں جو فوٹیج دیکھنے کے بعد حیران رہ گئی۔ اس نے بچے کا طبی معائنہ کرانے کے بعد اس کی میڈیکل رپورٹ تیار کرائی اور استاد کے خلاف اپنے وکیل کے ذریعے پبلک پراسیکیوٹر کے دفتر میں فوجداری شکایت درج کرائی۔

ڈیڑھ سال تک قید

پبلک پراسیکیوٹر آفس کی جانب سے تیار کردہ فرد جرم میں یہ بات نوٹ کی گئی کہ جب کیمرے کی ریکارڈنگ کا جائزہ لیا گیا تو متاثرہ بچے کو مشتبہ استاد نے واضح طور پر مارا پیٹا تھا۔

استاد کی طرف سے اپنی طرف سے پیش کردہ درخواست میں اپنا دفاع کیا ہے۔ اس نے دعویٰ کیا کہ وہ طالب علم کو کلاس روم میں لے جانے کی کوشش کر رہا تھا۔

فرد جرم میں یہ بھی استدعا کی گئی ہے کہ ٹیچر کو تشدد کرنے پر ترک تعزیرات کے تحت دفعہ 86 کے مطابق سزا دی جائے۔

ترکیہ میں اس نوعیت کے کیسز میں ملزمان کو جرم ثابت ہونے کے بعد چھ ماہ سےڈٰیڑھ سال تک کی سزا سنائی جاتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں