یمن کے حوثیوں کا برطانوی ڈسٹرائر پر حملے کا دعویٰ، برطانیہ کی تردید

دیگر دو تجارتی جہازوں نورڈرنی اور تاویشی پر بھی حملہ کیا گیا: حوثی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

برطانیہ کی وزارتِ دفاع نے اتوار کے روز کہا کہ یمن کے حوثی باغیوں کی جانب سے بحیرۂ احمر میں ایک برطانوی ڈسٹرائر جہاز پر بیلسٹک میزائل داغنے کا بیان غلط ہے۔

حوثیوں نے یہ نہیں بتایا کہ آیا ان کے بیان کے مطابق ایچ ایم ایس ڈائمنڈ پر کیے گئے حملے سے اسے کوئی نقصان پہنچا لیکن انہوں نے اسے "درست" قرار دیا۔

برطانوی وزارتِ دفاع کے ترجمان نے کہا، "یہ دعوے غلط ہیں۔"

حوثیوں نے کہا کہ انہوں نے دو تجارتی جہازوں پر بھی حملہ کیا تھا جن کی شناخت انہوں نے نورڈرنی اور تاویشی کے نام سے کی۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ تاویشی جو بحیرۂ عرب میں موجود تھا اور نورڈرنی دونوں کو نشانہ بنایا گیا تھا اور یہ کہ نورڈرنی پر آگ لگ گئی تھی۔

یاد رہے کہ حوثی ملیشیا نے نومبر سے غزہ میں فلسطینیوں کے ساتھ اظہارِ یکجہتی کے لیے ملک کے پانیوں میں بحری جہازوں پر حملے کیے ہیں۔

ان حملوں کی وجہ سے تجارتی جہاز رانی کی کمپنیاں جنوبی افریقہ کے گرد گھوم کر طویل تر اور زیادہ مہنگا سفر کرنے پر مجبور ہو گئی ہیں۔

امریکہ اور برطانیہ نے جہاز رانی پر حملوں کے جواب میں حوثی اہداف کے خلاف حملے کیے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں