سلامتی کونسل کی جانب سے غزہ جنگ بندی کی منظوری کا خیر مقدم کرتے ہیں: سعودی عرب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی وزارت خارجہ نے غزہ کی پٹی میں فوری جنگ بندی، یرغمالیوں کے تبادلے کے معاہدے اور پائیدار امن تلاش کے لیے سیاسی مذاکرات کی طرف واپسی کے حوالے سے امریکہ کی طرف سے پیش کردہ مسودہ قرارداد کو منظور کرنے پر اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کا خیر مقدم کیا ہے۔

مملکت سعودی عرب نے طویل جنگ کے خاتمے کے لیے بحران کے تمام فریقوں کے عزم کی اہمیت پر زور دیا۔ سعودی عرب نے پائیدار جنگ بندی تک پہنچنے اور مسئلہ فلسطین کو بین الاقوامی قراردادوں کے مطابق حل کرنے کے لیے تمام بین الاقوامی کوششوں کے لیے اپنی مکمل حمایت کا اعادہ کیا اور کہا کہ مملکت خطے کے استحکام اور بین الاقوامی امن و سلامتی کے حصول کی حمایت کرتی ہے۔

سلامتی کونسل نے غزہ کی پٹی میں جنگ بندی کا مطالبہ کرنے والی ایک قرارداد کا مسودہ منظور کیا۔ قرارداد کے حق میں 14 ووٹ پڑے اور روس نے ووٹنگ میں حصہ نہیں لیا۔ قرار داد میں حماس اور اسرائیل پر زور دیا گیا کہ وہ بغیر کسی تاخیر کے بائیڈن کی تجویز کی شرائط کو نافذ کریں۔

کونسل میں امریکہ کی نمائندہ لنڈا تھامس گرین فیلڈ نے غزہ کی پٹی میں جنگ بندی سے متعلق قرارداد کے مسودے پر ووٹنگ کے لیے بلائے گئے اجلاس میں اپنی تقریر میں کہا کہ ان کا ملک مصر اور قطر کے ساتھ مل کر جنگ بندی کے معاہدے تک پہنچنے کے لیے کام کر رہا ہے۔ جب تک موجودہ تجویز سے متعلق نکات پر کوئی معاہدہ نہیں ہوجاتا مذاکرات کا سلسلہ چلتا رہے گا۔

انہوں نے کہا کہ غزہ کی پٹی میں کوئی محفوظ جگہ نہیں ہے اور قابض اسرائیل کو شہریوں کے تحفظ کے لیے ضروری اقدامات کرنے چاہییں۔ غزہ میں انسانی حالات ابتر ہو رہے ہیں اور اس جنگ کی قیمت فلسطینی ادا کر رہے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں