.

شاہِ مراکش کا اردن میں شامی پناہ گزینوں کے کیمپ کا دورہ

شاہ عبداللہ دوم سے شام کی صورت حال پر بات چیت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مراکش کے شاہ محمد ششم نے جمعرات کو اردن کے شمال میں واقع شامی پناہ گزینوں کے ایک کیمپ اور ایک فیلڈ اسپتال کا دورہ کیا ہے۔

شاہ محمد ششم بدھ کو اردن کے دورے پر عمان پہنچے تھے اور انھوں نے اردن کے شاہ عبداللہ دوم سے دوطرفہ تعلقات ،شام کی تازہ صورت حال اور شامی مہاجرین کی آبادکاری کے بارے میں تبادلہ خیال کیا ہے۔

ملاقات کے بعد عمان میں شاہی محل کی جانب سے جاری کردہ بیان کے مطابق ''شاہ عبداللہ نے خبردار کیا کہ شامی بحران کے پورے خطے کے لیے سنگین مضمرات ہو سکتے ہیں۔ انھوں نے عالمی برادری سے اپیل کی کہ وہ خیمہ بستیوں میں مقیم دو لاکھ سے زیادہ شامی مہاجرین کی دکھ بھال اور انھیں بنیادی ضروریات کی فراہمی کے لیے اردن کی امداد کرے''۔

شاہ محمد ششم نے جمعرات کو بعد میں زاطاری کیمپ میں قائم کیے گئے مراکش کے زیر اہتمام ایک فیلڈ اسپتال کا معائنہ کیا۔ شاہ محمد ششم نے کیمپ میں بعض شامی مہاجرین سے ملاقات کی۔اس موقع پر مہاجرین کے ایک گروپ نے مراکش زندہ باد کے نعرے لگائے۔وہ اس خیمہ بستی کا دورہ کرنے والے پہلے عرب حکمران ہیں۔ان کی آمد کے موقع پر سکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے تھے۔ اس خیمہ بستی میں قریباً چھتیس ہزار شامی مہاجرین رہ رہے ہیں۔

اردن کا کہنا ہے کہ اگر شام سے مہاجرین کی آمد کا سلسلہ جاری رہتا ہے تو وہ دارالحکومت عمان کے مغرب میں ایک اور خیمہ بستی قائم کرے گا۔

شاہ محمد ششم اردن کے علاوہ چار خلیجی ریاستوں سعودی عرب ،قطر ،متحدہ عرب امارات اور کویت کا بھی دورہ کریں گے۔ان کے اس دورے کا مقصد مراکش کی بحران زدہ معیشت کے لیے مالی امداد کا حصول ہے۔چھے خلیجی ریاستوں پر مشتمل خلیج تعاون کونسل (جی سی سی) نے گذشتہ سال مراکش کو آیندہ پانچ سال کے دوران ترقیاتی منصوبوں کی مد میں پانچ ارب ڈالرز کی رقم دینے کا اعلان کیا تھا۔