.

ابراہیمی کی شامی صدر سے ملاقات، یک طرفہ جنگ بندی پر زور

عیدالاضحیٰ سے قبل خونریزی روکنے کے لیے سفارت کاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
اقوام متحدہ اور عرب لیگ کے شام کے لیے خصوصی ایلچی الاخضرالابراہیمی نے دمشق میں اتوار کو شامی صدر بشار الاسد سے ملاقات کی ہے۔انھوں نے شامی صدر اور حزب اختلاف پر عید الاضحیٰ سے قبل ملک میں یک طرفہ جنگ بندی پر زور دیا ہے۔

الاخضر الابراہیمی نے شامی صدر سے ملاقات کے بعد صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ''میں آیندہ جمعہ کو عید الاضحیٰ کے آغاز کے موقع پر شامی تنازعے کے تمام فریقوں سے یک طرفہ جنگ بندی کی اپیل کرتا ہوں اور اس جنگ بندی کا آج (اتوار) یاکل سے احترام کیا جانا چاہیے''۔

عالمی ایلچی نے گذشتہ ہفتے عشرے کے دوران بشار الاسد اور ان کی حزب مخالف کے مختلف دھڑوں کی حمایت کرنے والے ممالک کے دورے کیے ہیں اور ان پر بھی زوردیا ہے کہ وہ ہر دو فریقوں کو عیدالاضحیٰ کے آغاز سے قبل فائربندی پر آمادہ کرنے کے لیے اپنا اثر و رسوخ استعمال کریں۔

انھوں نے ہفتے کے روز شامی وزیر خارجہ ولید المعلم سے بات چیت کی تھی۔ شامی وزارت خارجہ نے ایک بیان میں اس ملاقات کو تعمیری اور سنجیدہ قرار دیا ہے۔

شام نے اب تک الاخضر الابراہیمی کی جانب سے پیش کردہ یک طرفہ جنگ بندی کی تجویز پر محتاط ردعمل کا اظہار کیا ہے۔شامی حکومت کا کہنا ہے کہ اسے باغیوں کی جانب سے یہ ضمانت دی جائے کہ وہ سرکاری فورسز کے جنگ بندی کے لیے کسی بھی اقدام کی صورت میں ردعمل میں وہی اقدام کریں گے۔