.

انقلابی تحریک کے بعد شامی اپوزیشن کا دوحہ میں اہم اجلاس

قومی کونسل کا انتخاب اور دیگر اہم امور ایجنڈے میں شامل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
شام کے مختلف الخیال حکومت مخالف گروپ اتوار کے روز قطری دارلحکومت دوحہ میں اہم اجلاس کرنے جا رہے ہیں۔ بشار الاسد حکومت کے خلاف احتجاجی تحریک کے آغاز کے بعد آج کا اجلاس اپوزیشن کا سب سے بڑا اجتماع سمجھا جا رہا ہے۔

اجلاس میں قومی کونسل کے تنظیمی ڈھانچے پر نظر ثانی کی جائے گی۔ نیز اپوزیشن اپنی کوششوں کو مجتمع کرنے کا طریقہ کار بھی اجلاس میں وضع کریں گے۔ اجلاس میں شریک بعض حکومت مخالف تنظیموں نے بتایا کہ دوحہ اجلاس میں شامی اپوزیشن پر مشتمل 'جلا وطن' حکومت بھی قائم کی جائے گی۔

اجلاس میں شامی حکومت مخالف رہنما ریاض سیف کے پیش کردہ قومی سٹیرنگ کمیٹی منصوبے پر بھی تبادلہ خیال کرے گا۔ مجوزہ منصوبے پر اتفاق رائے کی صورت میں یہ عمان میں قائم قومی کونسل کا متبادل قرار پائے گا۔

اجلاس میں قومی کونسل کے نئے سربراہ کا انتخاب بھی عمل میں آئے گا، اس سے پہلے قومی کونسل میں نئی اپوزیشن جماعتوں کی شمولیت کی منظوری دی جائے گی۔

لندن سے شائع ہونے والے کثیر الاشاعت روزنامہ 'الشرق الاوسط' نے اپنی حالیہ اشاعت میں بتایا کہ قومی کونسل کی قیادت کے لئے تین مرکزی رہنماؤں کے درمیان مقابلہ ہے۔ ان میں سرفہرست کونسل کے موجودہ چیئرمین عبدالباسط سیدا، سابق سربراہ برھان غلیوں اور اپوزیشن رہنما ریاض سیف شامل ہیں۔