.

شامی شہر درعا میں دھماکے، 20 فوجی ہلاک

دھماکے آفیسر کلب میں فوجی کیمپ میں ہوئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
لندن میں قائم انسانی حقوق آبزروٹری کے ڈائریکٹر رامی عبدالرحمن نے ہفتے کے روز اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ شام کے جنوبی شہر درعا میں فوجی چیک پوائنٹ پر دو گاڑیوں میں ہونے والے بارودی دھماکے میں بشار الاسد کے وفادار 20 فوجی ہلاک ہو گئے۔

آبزرویٹری کے مطابق بارود سے بھری دو گاڑیاں آفیسر کلب کے عقبی باغ میں دو فوجی کیمپوں کے قریب وقفے وقفے سے پھٹیں۔

انہوں نے بتایا کہ کلب کے عقبی باغ میں فوجی کیمپ تھے۔ عینی شاہدوں نے بتایا کہ دھماکے کے بعد دھماکے کے مقام سے ایمبولینس گاڑیوں کو ہلاک و زخمی اہلکاروں کو لیجاتے دیکھا۔ زخمیوں کو درعا نیشنل اہسپتال منتقل کیا گیا ہے۔

آبزرویٹری کے مطابق شہر کے ایک اور اسپورٹس گراؤنڈ میں شامی فوجی کیمپ کے قریب دھماکے ہوئے ہیں تاہم ان کی نوعیت معلوم نہیں ہو سکی، تاہم اس بات کی تصدیق ہو گئی کہ دھماکوں کسی قسم کا جانی نقصان نہیں ہوا۔

ادھر شام کی سرکاری خبر رساں ایجنسی 'سانا' نے درعا میں دو دھماکوں کی اطلاعات دی تھی جس میں بڑے پیمانے پر جانی اور مادی نقصان ہوا۔ سانا نے حادثے کی مزید کوئی تفصیل نہیں بتائی۔