.

سیناء میں اسلامی امارت قائم نہیں کر رہے محمد الظواہری

القاعدہ کے رہنما ایمن الظواہری کے بھائی کی العربیہ سے گفتگو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
القاعدہ کے سربراہ ڈاکٹر ایمن الظواہری کے چھوٹے بھائی محمد الظواہری نے کہا ہے کہ ان کی جماعت اسلامی جہاد کے حوالے سے سیناء کے علاقے میں اسلامی امارت قائم کرنے کی خبریں گمراہ کن ہیں۔

العربیہ نیوز چینل سے بات کرتے ہوئے محمد الظواہری نے کہا کہ ہماری جماعت دوسروں کو کافر قرار نہیں دیتی، اس لئے ہم پر تکفیری فرقے کے الزامات بے سرو پا ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ان اطلاعات میں بھی کوئی صداقت نہیں کہ اسلامی جہاد قاہرہ میں دہشت گرد بم حملوں کی منصوبہ بندی کر رہی ہے۔ بہ قول الظواہری ایسی خبریں اسلامی جہاد کے خلاف میڈیا میں ہونے والے منفی پروپیگنڈے کا حصہ ہیں۔

انہوں نے مطالبہ کیا کہ مصری میڈیا اور سیکیورٹی اداروں سے سابق حکومت کی باقیات کو پاک کیا جائے۔'ایسے فتنوں کو ہوا دینے والی پارٹیاں پوری قوم کو تباہ کر دیں گی۔ ان جماعتوں کو قومی مفاد کو ہر قیمت پر مقدم رکھنا چاہئے۔'

ایک سوال کے جواب میں محمد الظواہری نے بتایا کہ اسلامی جہاد اسلحے کے بجائے وعظ، کانفرنسوں اور کتابوں کے ذریعے اسلامی فہم پھیلانے میں مصروف ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ہماری جماعت سیاست میں حصہ لینے کی متمنی نہیں کیونکہ ہم جمہوریت کے نظریئے پر یقین نہیں رکھتے۔

'موجودہ جمہوریت کو ہم اس لئے مسترد کرتے ہیں کہ یہ اللہ کے بجائے لوگوں کو حاکم بناتی ہے۔ ہم اس جمہوریت کے قائل ہیں کہ جو انصاف، انسانی عظمت اور مساوات قائم کرنے میں معاون ہو۔ صرف ایسی جمہوریت ہی اسلامی تعلیمات سے ہم آہنگ ہے۔

"ہمارا صرف ایک مطالبہ ہے کہ حاکمیت اللہ تعالی کے لئے ہے اور اللہ کی قانون کے خلاف ہر چیز غیر قانونی تسلیم کی جائے۔"