.

غزہ پر حملہ فرانس، روس، مصر اور جی سی سی کی شدید مذمت

عالمی برادری سے اسرائیلی جارحیت رکوانے کا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
غزہ میں اسلامی تحریک مزاحمت [حماس] کے عسکری ونگ عزالدین القسام شہید بریگیڈ کے کمانڈر احمد الجعبری کی اسرائیلی میزائل حملے میں شہادت کے بعد عالمی سطح پر اس کی شدید مذمت کی جا رہی ہے۔ اسرائیلی جارحیت پر بطور احتجاج مصری سفیر کی تل ابیب سے واپسی کے جلو میں فرانس، خلیج تعاون کونسل 'جی سی سی' اور روس نے بھی اسرائیلی حملوں پر سخت برہمی کا اظہار کیا ہے۔



فرانسیسی خبر رساں ایجنسی 'اے ایف پی' کے مطابق جی سی سی نے ایک بیان میں غزہ پر حملوں کو فلسطینیوں کے خلاف اسرائیل کی ریاستی دہشت گردی قرار دیتے ہوئے اس کی شدید مذمت کی۔ جی سی سی نے اسرائیلی حملے اور معصوم فلسطینیوں کا قتل عام رکوانے کے لیے عالمی برداری سے فوری مداخلت کی اپیل کی ہے۔



خلیج کونسل کی وزارتی کمیٹی کے بیان میں مزید کہا گیا: "عرب ممالک کو غزہ پر اسرائیلی حملوں پر گہری تشویش ہے۔ جی سی سی قابض فوج کے غزہ پر حملوں کو ریاستی دہشت گردی قرار سمجھتی ہے اور ان میں ہونے والے جانی اور مالی نقصان کی تمام ذمہ داری اسرائیل پر عائد کرتی ہے۔" بیان میں غزہ پر اسرائیلی جارحیت رکوانے کے لیے سلامتی کونسل کا ہنگامی اجلاس بلانے کا بھی مطالبہ کیا گیا ہے تا کہ عالمی سطح پر اسرائیل کے خلاف دباؤ بڑھایا جا سکے۔



اسرائیل نے بدھ شام غزہ کی پٹی میں حماس کے ملٹری کمانڈر احمد الجعبری کو میزائل حملے میں شہید کر دیا تھا۔ حماس کمانڈر کے قتل کے بعد فلسطینی مزاحمت کاروں اور اسرائیلی فوج میں نئی جھڑپوں کا سلسلہ بھی شروع ہو گیا ہے۔

مصر کی جانب سے تل ابیب سے اپنے سفیر کی واپسی کے بعد صورت حال تیزی سے تبدیل ہو رہی ہے۔ ادھر روس اور فرانس نے بھی غزہ کی پٹی پراسرائیلی فوج کے پے در پے حملوں کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے قیام امن کی کوششوں کی راہ میں رکاوٹ قرار دیا ہے۔ ماسکو اور پیرس کا کہنا ہے کہ اسرائیل غزہ پر حملے کر کے خطے کو مزید کشیدگی کا شکار کرنے سے گریز کرے۔ دونوں ملکوں نے فریقین سے صبرو تحمل کا مظاہرہ کرنے اور کشیدگی کم کرنے کی ضرورت پر زور دیا ہے۔