.

اسرائیلی میزائل حملے میں غزہ کی ننھی پری جل گئی

80 فیصد زخمی عورتیں اور بچے ہیں: مصری فارمسسٹ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مصری فارمسسٹ ایسوسی ایشن کے صدر ڈاکٹر محمد عبدالجواد نے انجمن کے دیگر عہدیداروں کے ہمراہ اسرائیلی جارحیت کی شکار غزہ کی پٹی کا دورہ کیا۔ ڈاکٹر عبدالجواد ایک اہسپتال کے دورے کے موقع پر وہاں ایک جھلسی ہوئی ننھی پری کو دیکھ کر آبدیدہ ہو گئے۔ شیرخوار بچی کا جسم اسرائیلی بمباری سے بری طرح جھلس گیا تھا۔

عبدالجواد نے جھلسی ہوئی ننھی بچی کو ہاتھوں میں اٹھا کہ کہا کہ "میں یہ ننھی شہید یورپ، یو این سیکرٹری جنرل اور فلسطین کے دفاع میں پس وپیش کے شکارعربوں کی خدمت میں پیش کرتا ہوں۔ انہیں اس جلی ہوئی مگر مسکراتی شہیدہ کا تحفہ مبارک ہو"۔

واضح رہے کہ اسرائیل، غزہ پر حملے میں عمومی طور پر بچوں کو نشانہ نہیں بناتا لیکن اس کے لڑاکا طیاروں کا ہدف رہائشی علاقے اور عام شہریوں کے گھر ہوتے ہیں کیونکہ اسرائیل کے بہ قول ان علاقوں کو حماس اپنا اسلحہ گودام اور محفوظ پناہ گاہوں کے طور پر استعمال کرتے ہیں۔

مصری فارمسسٹس کے وفد نے اپنا دورہ غزہ کے موقع پر العربیہ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ غزہ پر حالہ اسرائیلی حملے میں 80 فیصد زخمی عورتیں اور بچے ہیں جبکہ 20 فیصد زخمی نوجوان ہیں۔