.

اسرائیل، غزہ پر حملے کو وسعت دینے کو تیار ہے نیتن یاہو

عالمی لیڈروں سے غزہ حملے سے متعلق بات چیت کر رہے ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
جنگ پسند اسرائیلی وزیر اعظم بنجمن نیتن یاہو نے دھمکی دی ہے کہ اسرائیل، غزہ پر حملے کو وسعت دینے کو تیار ہے۔

نیتن یاہو نے اتوار کو کابینہ کے ہفتہ وار اجلاس سے خطاب میں فلسطینی تنظیم حماس اور دوسری مزاحمتی تنظیموں کو دہشت گرد قرار دیتے ہوئے کہا کہ ''ہمیں ان سے بھاری قیمت چکانا پڑی ہے اور اسرائیل کی دفاعی افواج انھوں نے کہا کہ غزہ کی پٹی میں اسرائیلی فوج کی کارروائیاں جاری ہیں اور ہم اس آپریشن کو وسعت دینے کو تیار ہیں''۔

لیکن انھوں نے غزہ پر زمینی حملے کے واضح امکان کے حوالے سے کچھ نہیں کہا کہ کب یہ حملہ کیا جا سکتا ہے۔ انتہا پسند نیتن یاہو کا کہنا تھا کہ ''ہم عالمی لیڈروں سے بات چیت جاری رکھے ہوئے ہیں اور ہم ان کی جانب سے اسرائیل کے دفاع کے حق کو تسلیم کرنے کو سراہتے ہیں''۔

ان کا یہ بیان ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب اسرائیلی فوج کی غزہ پر فضائی جارحیت جاری ہے اور ہزاروں کی تعداد میں صہیونی فوجی غزہ پر زمینی چڑھائی کے لیے سرحد کی جانب پیش قدمی کر رہے ہیں۔

نیتن یاہو نے محصور فلسطینیوں پر چڑھائی کے لیے فوری طور پر چوکس ہونے والے ریزرو فوجیوں کی تعریف کی اور کہا کہ وہ کسی بھی سرگرمی کے لیے تیار ہیں۔ ان میں سولہ ہزار کو ہنگامی حکم کے تحت طلب کیا گیا ہے۔

اسرائیلی فوج نے غزہ کی جانب جانے والی شاہراہوں کو جمعہ کی رات سیل کر دیا تھا۔ اس کے بعد اسرائیلی کابینہ نے پچھہتر ہزار ریزرو فوجیوں کو بھرتی کرنے کی منظوری دے دی تھی جبکہ سفارتی سطح پر اسرائیل کو جارحیت سے باز رکھنے کے لیے کوششیں بھی جاری ہیں۔