.

غزہ میں جنگ بندی اسرائیل کے ہاتھ میں ہے خالد مشعل

حماس تمام امکانات کے لیے تیار ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
غزہ کی حکمراں حماس کے جلا وطن رہ نما خالد مشعل کا کہنا ہے کہ ان کی جماعت جنگ بندی کے لیے اسرائیل کی شرائط کو تسلیم نہیں کرے گی۔ان کا کہنا ہے کہ فلسطینی ہتھیاروں نے اسرائیل کو غیر محفوظ بنا دیا ہے۔

خالد مشعل نے مصرکے دارالحکومت قاہرہ میں سوموار کو نیوز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ فریقین کے درمیان جنگ بندی کا معاہدہ طے پا سکتا ہے لیکن لڑائی میں شدت بھی آ سکتی ہے اور حماس تمام امکانات کے لیے تیار ہے۔

حماس کے سربراہ نے کہا کہ ''جس کسی نے بھی جنگ کا آغاز کیا ہے،اسے ہی اس کا خاتمہ کرنا چاہیے''۔انھوں نے کہا کہ اسرائیلی وزیر اعظم بنجمن نیتن یاہو نے جنگ بندی کی درخواست کی ہے لیکن ان کے اس بیان کی صہیونی حکومت نے فوری تردید کر دی ہے۔

خالد مشعل کا کہنا تھا کہ حماس صورت حال کو مزید کشیدہ کرنا چاہتی ہے اور نہ وہ اسرائیل کو غزہ پر زمینی چڑھائی کے لیے انگیخت دینا چاہتی ہے لیکن ان کا کہنا تھا کہ ''اسرائیل غزہ پر حملے کے مقاصد حاصل کرنے میں ناکام رہا ہے اور مزاحمت کے ہتھیاروں نے دشمن کو غیر محفوظ بنا دیا ہے''۔