.

اسرائیلی سکیورٹی فورسز نے 55 فلسطینیوں کو گرفتار کر لیا

غزہ میں جنگ بندی کے بعد مغربی کنارے میں کارروائی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
اسرائیلی سکیورٹی فورسز نے غزہ میں جنگ بندی کے بعد جمعرات کو مغربی کنارے میں کارروائی کرکے پچپن فلسطینی مزاحمت کاروں کو گرفتار کر لیا ہے۔

اسرائیلی فوج نے ایک بیان میں کہا ہے کہ گرفتار کیے گئے فلسطینیوں کا مختلف مزاحمتی تنظیموں سے تعلق ہے اور ان میں بعض سنئیر عہدے دار بھی شامل ہیں۔ بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ اسرائیلی کمیونٹیوں میں دراندازی کو روکنے کے لیے کارروائی جاری رکھی جائے گی۔

گذشتہ روز اسرائیلی دارالحکومت تل ابیب میں ایک بس میں دھماکے کے نتیجے میں سترہ یہودی زخمی ہو گئے تھے۔ اسرائیلی حکام نے اس واقعہ کو دہشت گردی قرار دیا تھا اور کہا تھا کہ حملہ آور ممکنہ طور پر مغربی کنارے کی جانب سے آئے تھے لیکن ابھی تک کسی گروپ نے اس حملے کی ذمے داری قبول نہیں کی۔

ادھر غزہ میں جمعرات کو جنگ بندی پر عمل درآمد کیا جا رہا ہے۔ غزہ پر اسرائیلی فوج کی ایک ہفتے تک جاری رہی ریاستی دہشت گردی میں ایک سو ساٹھ فلسطینی شہید ہو گئے تھے۔ مغربی کنارے میں غزہ میں اسرائیلی جارحیت کے خلاف مظاہرے کیے گئے تھے اور ان میں اسرائیلی فوجیوں نے دو فلسطینیوں کو گولی مار کر شہید کر دیا تھا۔