.

اسرائیل کے ساتھ جنگ بندی کی خلاف ورزی گناہ ہو گی عالم دین

تمام فلسطینی سمجھوتے کی پاسداری کریں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
غزہ کی پٹی سے تعلق رکھنے والے ایک معروف عالم دین نے ایک فتویٰ جاری کیا ہے جس میں انھوں نے اسرائیل اور حماس کے درمیان حال ہی میں طے پائے جنگ بندی کے سمجھوتے کی خلاف ورزی کو گناہ قرار دیا ہے۔

عالم دین سلیمان الضیاء نے ہفتے کی رات یہ فتویٰ جاری کیا ہے۔اس سے جنگ بندی کے سمجھوتے کو مذہبی جواز بھی حاصل ہو جائے گا اور غزہ میں حماس کی حکومت اس کے نفاذ کے لیے کوئی بھی اقدامات کر سکے گی۔

اس فتویٰ میں کہا گیا ہے کہ ''مصری بھائیوں کی ثالثی میں طے پائی جنگ بندی کی پاسداری ہم سب کا فرض ہے۔ اس کی خلاف وزری گناہ ہو گی''۔ اس سے پہلے غزہ میں حماس کے وزیر اعظم اسماعیل ہنئیہ نے بھی ایک بیان میں تمام فلسطینی مزاحمتی تنظیموں پر زور دیا تھا کہ وہ جنگ بندی سمجھوتے کی پاسداری کریں۔



حماس اور اسرائیل کے درمیان مصر کی ثالثی کے نتیجے میں گذشتہ بدھ کی رات جنگ بندی کا اعلان کیا گیا تھا لیکن اس کی تمام تفصیل ابھی تک سامنے نہیں لائی گئی۔ اس پر جمعرات سے عمل درآمد کیا جا رہا ہے۔ غزہ کی پٹی میں اسرائیلی فوج کی ایک ہفتے تک جاری رہی ریاستی دہشت گردی میں ایک سو تریسٹھ فلسطینی شہید اور ایک ہزار سے زیادہ زخمی ہو گئے تھے جبکہ فلسطینیوں کے راکٹ حملوں میں چھے اسرائیلی مارے گئے تھے.