.

بحرینی اپوزیشن رہنما کا جعلی بلٹ پروف اسٹیج سے خطاب

بزعم خود مخالفین کی ہٹ لسٹ پر ہونے کا مضحکہ خیز دعوی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
سیاست دان خود کو عوامی حلقوں میں زیادہ با اثراور اور مقبول شخصیت باور کرانے کے لیے طرح طرح کے نمائشی طریقے اختیار کرتے ہیں۔ یہاں تک کہ بعض ’فرشتہ صفت‘ شخصیات کے اقدامات لوگوں میں مذاق بن کر رہ جاتے ہیں۔

ایسا ہی ایک واقعہ خلیجی ریاست بحرین کے ایک اپوزیشن رہ نما الشیخ علی سلمان کا بھی ہے۔ انہوں نے عام شیشے کے بنے ایک نمائشی اسٹیج کیبن سے اپنے حامیوں سے خطاب کیا۔ موصوف کی تقریر کے لیے محض ایک نمائشی بلٹ پروف اسٹیج تیار کیا گیا۔ ایسا اس لیے کیا گیا کہ تاکہ وہ لوگوں کو یہ جتلا سکیں کہ وہ بھی اپنے مخالفین کی ہٹ لسٹ پر ہیں۔



العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق شیخ علی سلمان کی تقریر سے زیادہ ان کا یہ نمائشی سہارا سوشل میڈیا پر موضوع بحث بنا ہوا ہے۔ بڑی تعداد میں شہری 'ٹیوٹر' پر شیخ سلمان کے انداز تخاطب پر تبادلہ خیال کرتے ہوئے طنزیہ تبصرے کر رہے ہیں۔

ایک صاحب نے اپنی ٹویٹ پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ’’علی سلمان ایک بلٹ پروف اسٹیج سے تقریر کر رہے ہیں۔ حالانکہ وہ اسے قبل لوگوں میں گھل مل کر رہتے تھے اور انہیں کوئی خطرہ نہیں تھا اور نہ ہی انہیں کسی نے کوئی نقصان پہنچایا۔ دراصل خطرہ اب بھی کوئی نہیں لیکن موصوف محض خود نمائی، پروپیگنڈے اور معاملے کو بڑھا چڑھا کر پیش کرنے کے لیے اس طرح کے نمائشی چیزوں کا سہارا لے رہے ہیں۔ انہیں معاملے کو اچھالنے کے لیے اور کوئی راستہ نہ سوجھا اور ایک نمائشی بلٹ پروف اسٹیج بنا کر وہ لوگوں کو ’بے وقوف‘ بنانے لگے ہیں‘‘۔ ایک دوسرا ناقد تبصرہ کرتے ہوئے لکھتا ہے کہ شیخ علی سلمان دماغی طور پر کچھ متاثر معلوم ہوتے ہیں۔ ان کی تقریر کا سیاسی تجزیہ کرنے کے بجائے موصوف کے نفسیاتی معائنے کی زیادہ ضرورت ہے۔



معاملہ صرف سوشل میڈیا تک محدود نہیں رہا بلکہ بحرین کے ایک اخبار 'الرائے' میں ایک خاتون سوسن الشاعر نے اسی حوالے سے ایک مضمون بھی لکھ ڈالا ہے۔ سوسن لکھتی ہیں کہ بحرینی لیڈر علی سلمان خود کو لبنانی شیعہ لیڈر شیخ حسن نصراللہ کا ہم پلہ ثابت کرنےکے لیے ان ہی کی نقالی کر رہے ہیں۔