.

اپوزیشن مطالبات مسترد کر کے مرسی نے مذاکرات کا موقع گنوا دیا

نوجوان مطالبات منظوری تک احتجاجی دھرنے جاری رکھیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مصری صدر ڈاکٹر محمد مرسی کے اختیارات میں اضافے کی مخالف سیاسی جماعتوں کے نمائندہ نیشنل سالویشن فرنٹ کے ترجمان اور سوشلسٹ ڈیموکریٹک پارٹی کے صدر محمد ابو الغار نے کہا ہے کہ ڈاکٹر مرسی کی شعبدہ بازی نے ملک کو درپیش سیاسی بحران کو مذاکرات کے ذریعے حل کرنے کا موقع ضائع کر دیا ہے۔

"صدر مرسی زمینی حقائق منوانے کے لئے مزید وقت حاصل کرنا چاہتے ہیں۔ ہم ڈس انفارمیشن کو مسترد کرتے ہیں اور اپنے نقطہ نظر پر قائم ہیں۔"

ہفتے کے روز نیوز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ابو الغار نے صدر مرسی سے مطالبہ کیا کہ وہ اخوان المسلمون کی ملیشیا تنظمیں ختم کریں۔ وہ مظاہروں کو تحفظ دینے کے سلسلے میں اپنی ذمہ داری پوری کریں۔

بہ قول ابو الغار نیشنل سالویشن فرنٹ کسی جماعت کے دفتر کو نذر آتش کرنے یا پھر دیگر

تنصیبات کو تباہ کرنے سے متعلق کسی بھی پرتشدد کارروائی کی یکساں طور پر مذمت کرتا ہے۔ ان کا اشارہ مصر کی حکومتی جماعت کے مختلف شہروں میں دفاتر کو نذر آتش کرنے کی جانب تھا۔

سالویشن فرنٹ نئے دستور میں عوام، لیبر کلاس اور ملازمین کے حقوق پر ڈاکے کی سخت مذمت کرتا ہے۔ ابو الغار نے کہا کہ نیشنل سالویشن فرنٹ غیر جانبدار طریقے سے قومی مذاکرات کے دوبارہ آغاز کی اہمیت پر زور دیتا ہے۔

اپوزیشن اتحاد نے مصری نوجوانوں پر زور دیا ہے کہ وہ ملک کے مختلف اسکوائرز میں اپنے مطالبات کی منظوری تک احتجاجی دھرنے جاری رکھیں۔ انہوں نے نیوز کانفرنس سمیٹتے ہوئے کہا کہ عوامی موڈ عام ہڑتال کی طرف بڑھتا دکھائی دے رہا ہے