.

القاعدہ کے اسیر جنگجو کا بغداد جیل میں دھماکا

دوران حراست دھماکا خیز مواد جمع کرتا رہا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
عراقی دارلحکومت بغداد کی مرکز میں واقع 'تسفیرات الرصافہ' میں القاعدہ سے تعلق رکھنے والے ایک اسیر نے خود کو دھماکے سے اڑا لیا جس کے نتیجے میں وہ شدید زخمی ہو گیا جبکہ دو دوسرے قیدی اور ایک جیلر کو بھی زخم آئے۔

ایک سیکیورٹی عہدیدار کے مطابق القاعدہ کے جنگجو کو انسداد دہشت گردی کے قانون کے تحت قید کی سزا سنائی گئی تھی۔ اپنی اسیری کے دوران وہ کسی نہ کسی طرح اپنے سیل میں دھماکا خیز مواد کرتا رہا، جسے اس سے دھماکا خیر بیلٹ میں چھپا رکھا تھا۔

واقعے کے بعد حکام نے جیل کے تمام دروازے بند کر دیئے ہیں۔ انٹلیجنس کے دستے جیل میں تحقیقات کے لئے داخل ہو گئے ہیں۔

جیل میں تعینات ایک ذریعے نے بتایا کہ القاعدہ کے جنگجو نے سیل کا دروازہ کھولا اور تیزی سے ڈیوٹی پر متعین جیلر کی طرف لپکا تاہم اس کے قریب جانے سے قبل ہی دھماکے سے پھٹ گیا۔

ذرائع کے مطابق دھماکا زیادہ شدید نہیں تھا، جس کی وجہ سے قیدی ہلاک نہیں ہوا۔ القاعدہ کے مضروب اہلکار کو علاج کی خاطر کینیڈین ہسپتال داخل کرا دیا گیا ہے۔