.

صدر مرسی پر ریفرینڈم میں دھاندلی کا الزام، ایوان صدر کی تردید

'محمد مرسی نے ریفرینڈم میں ووٹ رجسٹرڈ جگہ نہیں ڈالا'

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
شکست خوردہ صدارتی امیدوار جنرل ریٹائرد احمد شفیق نے نئے دستور کے بارے میں ہونے والے ریفرینڈم کی پہلی 'دھاندلی' کی نشاندہی کرتے ہوئے کہا ہے کہ قاہرہ میں ہونے والی اس غیر قانونی کارروائی کا مرکز و محور صدر محمد مرسی کی اپنی ذات ہے جنہوں نے اپنا ووٹ نیو مصر کے علاقے میں ڈالا حالانکہ ان کا نام الشرقیہ گورنری کی ووٹنگ لسٹ میں درج تھا۔

اس الزام کے جواب میں مصری ایوان صدر نے وضاحتی بیان میں کہا ہے کہ صدر محمد مرسی نے صدارتی انتخاب جیتنے کے بعد اپنی اقامت الشرقیہ سے نیو مصر میں منتقل کی تھی۔ انتخاب سے پہلے وہ الشرقیہ میں مقیم تھے، تاہم کامیابی کے بعد ان کی سکونت نیو مصر میں ہے، لہذا اس علاقے میں ووٹ ڈالنا اپوزیشن کی مزعومہ دھاندلی کا مظہر نہیں۔

صدر مرسی کے وضاحتی بیان کے جواب میں جنرل شفیق کا کہنا تھا کہ محمد مرسی نیو مصر میں صدارتی محل میں سکونت کا حوالہ ٹھیک دے رہے ہیں تاہم زمینی حقائق اور ووٹنگ لسٹ ان کے سکونت منتقلی کے مطابق تبدیل نہیں ہوئی۔ انہوں سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر اپنا اسٹیٹس تبدیل کرتے ہوئے لکھا: "دھاندلی کے باوجود ریفرینڈم میں 'نامنظور' کا بلند آہنگ نعرہ صدر مرسی کا ہر جگہ بشمول مساجد تک پیچھا کرے گا۔"