.

ہمیں ایران کے بوشھر ایٹمی پلانٹ سے خطرہ ہے عبداللہ بن زاید

تہران پلانٹ میں لیکج روکنے کی صلاحیت نہیں رکھتا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
متحدہ عرب امارات کے وزیر خارجہ الشیخ عبداللہ بن زاید آل نھیان نے کہا ہے خلیج تعاون کونسل کو ایرانی نیوکلیئر پروگرام سے بالعموم اور بوشھر میں اس کے ایٹمی پلانٹ سے بالخصوص تشویش لاحق ہے۔ تہران کا اپنے ایٹمی پروگرام کے بارے میں کھل کر وضاحت نہ کرنے کی وجہ سے اس کے پرامن ہونے سے متعلق شکوک و شبہات پیدا کر رہے ہیں۔



الشیخ عبداللہ بن زاید آل نھیان کا کہنا تھا کہ جی سی سی کو لاحق دوسرا خطرا ایرانی ماحول سے ہے۔ یو اے ای وزیر خارجہ نے کہا کہ انہیں شک ہے کہ ایران بوشھر نیوکلیئر پلانٹ کو متسقبل کسی لیکج سے بچا سکے کیونکہ اس منصوبے کی عمر کافی زیادہ ہو گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں شبہ ہے کہ کسی ایسی لیکج کی صورت میں ایران کے اس پر قابو پانے کی صلاحیت نہیں ہو گی۔

العربیہ سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ 'ہمیں علم ہے کہ بوشھر پلانٹ بہت پرانا ہو گیا ہے اس کی حالت ٹھیک نہیں رہی۔' یو اے ای کے وزیر خارجہ نے ان خیالات کا اظہار خیلیج تعاون کونسل کے 33 ویں سربراہی اجلاس سے کے موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا۔ سمٹ میں جی سی سی کو یورپی یونین کی طرز کی یونین کے قالب میں ڈھالنے کی ابتدائی کوششیں جاری ہیں۔