.

پاپولر فرنٹ کے دس کارکنان اسرائیلی انٹیلی جنس کے زیر حراست

دو فلسطینیوں پر اسرائیلی فوجی کے اغوا کی سازش پر فرد جرم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
اسرائیل کے داخلی سکیورٹی کے ذمے دار خفیہ ادارے شین بیت نے یہودیوں کے اغوا کے مبینہ سازش کے الزام میں پاپولر فرنٹ برائے آزادی فلسطین (پی ایل ایف پی) کے دس کارکان کو گرفتار کرنے کی اطلاع دی ہے۔

شین بیت نے منگل کو جاری کردہ ایک بیان میں ان فلسطینیوں کی گرفتاری کی اطلاع دی تھی۔انھیں کئی ماہ قبل گرفتار کیا گیا تھا لیکن ان پر میڈیا بلیک آؤٹ نافذ تھا۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ ''شین بیت نے اسرائیلی فوج اور پولیس کی مدد سے پی ایل ایف پی کے ایک مسلح سیل کے ارکان کو گرفتار کیا تھا۔ وہ اسرائیلیوں کے اغوا کی منصوبہ بندی کررہے تھے اور ان اغوا کیے جانے والے اسرائیلیوں کو وہ اسرائیل میں قید اپنے سربراہ احمد سعادات کی رہائی کے لیے سودے بازی کے طور پر استعمال کرنا چاہتے تھے''۔

بیان کے مطابق پی ایل ایف پی کے دوارکان مغربی کنارے کے شہر رام اللہ سے تعلق رکھتے ہیں اور ان دونوں نے ایک اسرائیلی فوجی کے اغوا کی سازش تیار کی تھی تاکہ وہ اس کے بدلے میں احمد سعادات کو رہا کراسکیں۔


ان دونوں کے خلاف فوجی ٹرائبیونل میں ایک صہیونی فوجی کے اغوا کی سازش کے الزام میں فرد جرم عاید کی گئی ہے۔ باقی آٹھ فلسطینیوں کو فوجیوں کے خلاف دہشت گردی کی سرگرمیوں میں ملوث ہونے اور نقض امن کے الزامات کا سامنا ہے۔

واضح رے کہ پاپولر فرنٹ برائے آزادی فلسطین کے سربراہ احمد سعادات اس وقت اسرائیلی جیل میں قید ہیں۔ انھیں اسرائیلی فوج نے مختلف حملوں کے الزام میں گرفتار کیا تھا اور انھیں 2008ء میں ان حملوں میں ملوث ہونے کے الزام میں تیس سال قید کی سزا سنائی گئی تھی۔