.

عراق میں خانہ جنگی کے بارے میں طارق الھاشمی کا انتباہ

المالکی، شامی حکومت کی حمایت کر رہا ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
عراقی نائب صدر طارق الھاشمی نے عراق میں تقسیم اور خانہ جنگی کے بارے میں خبردار کیا ہے۔ انہوں نے وزیر اعظم نوری المالکی کو خونی مطلق العنان حکمران قرار دیتے ہوئے امید ظاہر کی ہے کہ اچانک منظم ہونے والی عوامی تحریک ان کے اقتدار کی بساط لپیٹ سکتی ہے۔

لندن سے شائع ہونے والے مؤقر اخبار 'الحیات' کو اپنے خصوصی انٹرویو میں طارق الھاشمی کا کہنا تھا کہ کرپشن، ظلم اور بدانتظامی ملک میں عوامی تحریک کو مہمیز دے سکتی ہے، جس میں غربت اور بے روزگاری کے مارے لاکھوں شہری ان کے اقتدار کی بساط لپیٹ سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کرپشن اور بری حکمرانی میں شامی حکومت کو پوری طرح نوری المالکی کی حمایت حاصل ہے۔

طارق ہاشمی نے نوری المالکی کے چند دن پہلے دیئے گئے بیان کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ وہ خود اس بات کا اعتراف کر چکے ہیں کہ ان کا ملک اپنی فضائی حدود سے گزرنے والے ہر ایرانی جہاز کی تلاشی لینے کی صلاحیت نہیں رکھتا حالانکہ وہ عرب لیگ اور یو این کو خود ایسا کرنے کی یقین دہانی کرا چکے تھے۔ نوری المالکی امریکا کو کرائی گئی یقین دہانیوں کے سلسلے میں روز اول سے ہی غلط بیانی کر رہے ہیں۔

یہ بیانات ایسے وقت میں سامنے آ رہے کہ جب آج ملک کے مختلف شہروں میں نوری المالکی کی اہل سنت مسلک کے پیروکار حکمرانوں اور عوام کے خلاف معاندانہ پالیسی کے خلاف بڑا احتجاج منظم کیا جا رہا ہے۔