.

یہودی مصر آ جائیں اخوان کے رہ نما کے بیان کا خیر مقدم

مصریوں کی جانب سے شدید ردعمل کا اظہار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
اسرائیل کے ایک ٹی وی چینل نے اخوان المسلمون کے سنئیر عہدے دار اور صدر محمد مرسی کے مشیر عصام العریان کی جانب سے اسرائیل میں سالہا سال سے مقیم مصری یہودیوں کو اپنی آبائی سر زمین پر واپس آ کر آباد ہونے کی دعوت کا خیر مقدم کیا ہے۔

عصام العریان نے ایک مقامی ٹی وی چینل ڈریم ٹی وی کے ساتھ گذشتہ جمعرات کو ایک انٹرویو میں کہا تھا کہ ''یہودیوں کے لیے بہتر یہ ہے وہ مصر جیسے ملک میں رہیں اور ایک ایسے ملک سے اٹھ آئیں جو قبضے کی آلائشوں سے آلودہ ہے''۔ ان کا اشارہ اسرائیل کی جانب تھا۔

انھوں نے کہا کہ ''ہر مصری کو اپنے آبائی وطن میں واپسی کا حق حاصل ہے خواہ اس کا تعلق کسی بھی مذہب سے ہے۔ مصری یہودیوں کو بھی اپنے وطن لوٹ آنا چاہیے اور فلسطینی عوام کی جگہ چھوڑ دینی چاہیے۔ انھیں ایک سفاک ،خونیں اور نسل پرست قبضہ گیر رجیم کے تحت رہنے سے انکار کردینا چاہیے''۔

اسرائیل کے ایک ٹیلی ویژن چینل 10 نے عصام العریان کے اس بیان کا خیرمقدم کیا ہے اور ایک رپورٹ میں کہا ہے کہ ''مصری یہودیوں کے مصر سے نکلنے کے کئی سال کے بعد کسی نے تو ان کی واپسی کی بات کی ہے''۔

لیکن چینل 10 کی رپورٹ کے مطابق سوشل میڈیا نیٹ ورک استعمال کرنے والے مصریوں نے عصام العریان کے اس بیان پر شدید ردعمل کا اظہار کیا ہے اور انھیں اسرائیلی اور امریکی ایجنٹ قرار دینے کے علاوہ ان پر غداری کا الزام عاید کیا ہے۔