.

اسرائیل نے گولان کے علاقے میں سیکیورٹی دیوار کی تعمیر شروع کر دی

اسد حکومت خاتمے کا دھڑکا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
اسرائیلی فوج نے گولان کی پہاڑیوں اور شام کے ساتھ اپنی سرحد کے پر سیکیورٹی دیوار تعمیر کرنا شروع کر دی ہے۔

صہیونی وزارت دفاع بشار الاسد حکومت کے خاتمے سے قبل دیوار کی تعمیر مکمل کرنا چاہتی ہے مبادا غیر فوجی علاقے سے اسرائیل پر حملے شروع ہو جائیں۔ اسرائیل کو خدشہ ہے کہ شامی اپوزیشن یا حزب اللہ بشار الاسد کے کیمیائی ہتھیاروں کا کںڑول حاصل کر لے۔

شامی سرحدی علاقے گولان سے العربیہ کے نمائندے زیاد حلبی کے مطابق اسرائیل نے سرحد پر ویسی ہی سیکیورٹی دیوار بنانا شروع کر دی ہے جیسی گولان کی مقبوضہ پہاڑیوں میں مجدل شمس میونسپلٹی میں بنائی گئی تھی۔ انہوں نے بتایا کہ سیکیورٹی دیوار آٹھ میٹر بلند ہے اور یہ چار دہایوں سے موجود سیکیورٹی انتظامات کی جگہ لے گی۔

دیوار جنوب میں 'الحمہ' سے شروع ہو کر مقبوضہ گولان کے شمال میں'القنیطرہ' برج تک جائے گی۔ انہوں نے مزید کہا اسرائیلی وزارت دفاع نے 54 کلومیڑ طویل سیکیورٹی دیوار کو جلد از جلد مکمل کرنے کی ہدایت کی ہے کیونکہ تل ابیب کو خدشہ ہے کہ بشار الاسد کے حکومت خاتمے کے بعد سرحدی علاقہ بالخصوص غیر فوجی علاقہ اسرائیل اہداف پر حملوں کی من بھاتی گذرگاہ بن سکتا ہے۔ یہ علاقہ مصری سرحد کے سیناء سے مشابہت رکھتا ہے۔

یہ کارروائی علاقے میں چالیس برس کی پرامن صورتحال کے بعد چند ہفتے قبل شامی علاقے سے اسرائیل میں راکٹ فائرنگ کے بعد دیکھی جا رہی ہے۔