.

صالح المطلک کا مالکی سے استعفی اور قبل از وقت انتخاب کا مطالبہ

عبوری حکومت انتخاب نہ لڑنے کا عہد کرے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
عراق کے نائب وزیر اعظم صالح المطلک نے نوری المالکی حکومت سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کیا ہےاور کہا ہے کہ اس کے بعد قبل از وقت انتخابات کرائے جائیں۔

بہ قول صالح المطلک یہ انتخابات غیر جانبدار عبوری حکومت کرائے۔ عبوری حکومت میں ملک کی موجوہ سیاسی قیادت کا کوئی فرد شامل نہ ہو اور نہ ہی وزیر اعظم نوری المالکی آیندہ انتخاب میں امیدوار ہوں۔

ان خیالات کا اظہار عراقی رہنما نے العربیہ کے فلیگ شپ پروگرام 'پوائنٹ آف آرڈر' میں اظہار خیال کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے نوری المالکی کو "ڈکٹیٹر" قرار دیتے ہوئے کہا کہ وہ اپنی روش نہیں بدلیں گے۔

صالح المطلک نے عراقی وزیر مالیات رافع العیساوی کے محافظوں کو مسلح افراد کے ہاتھوں گرفتاری کے واقعے کو غیر قانونی اور غیر اخلاقی قرار دیتے ہوئے کہا کہ ملکی عدالتوں کے بعض فیصلے شفاف نہیں ہیں۔

اسی اثناء میں عراقی وزیر اعظم نوری المالکی نے اپنی حکومت کے خلاف احتجاجی دھرنا دینے والے مظاہرین کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ "یہ وقت آپ کی کامیابی کا نہیں ہے۔" اس سے ان کی مراد یہ تھی کہ ان کی حکومت کے خلاف مظاہرے ختم کئے جائیں۔