.

مالکی، عراق کی تقسیم کے ایرانی ایجنڈے پر عمل پیرا ہیں الدوری

صدام حسین عہد کے نائب صدر کا ویڈیو پیغام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مصلوب عراقی رہنما صدام حسین کے دور حکومت میں نائب صدر عزہ ابراهيم الدوری نے وزیر اعظم نوری المالکی پر الزام عاید کیا ہے کہ وہ عراق کی تقسیم کا ایرانی حمایت یافتہ ایجنڈہ نافذ کرنا چاہتے ہیں۔

صدام حسین کی پھانسی کے بعد مفرور عزہ ابراهيم الدوری کے بارے میں مصدقہ اطلاع ہے کہ وہ اس وقت کی حکمران جماعت'بعث' کے سربراہ بنے۔ العربیہ کو ملنے والی الدوری کے ریکارڈ شدہ پیغام کی ویڈیو ٹیپ میں واضح طور پر بیان دیتے دکھائی دیتے ہیں کہ "وہ مرکزی بابل گورنری سے عراقی فوج کے یوم تاسیس کے موقع پر مخاطب ہیں۔"

انہوں نے کہا کہ میری حمایت ان لوگوں کے ساتھ ہے کہ جو ملک کے مختلف علاقوں میں گزشتہ دو ہفتوں سے وزیر اعظم کے خلاف احتجاج کر رہے ہیں۔

جمعہ کے روز بھی ہزاروں سنی مسلک شہریوں نے عراق کے طول و عرض میں مظاہرے کئے جس میں شرکاء نے نوری المالکی پر کڑی تنقید کرتے ہوئے مطالبہ کیا کہ بلاجواز طور پر گرفتار کئے جانے والے شہریوں کو فی الفور رہا کیا جائے۔

یہ مظاہرے نوری المالکی کی سربراہی میں شیعہ حکمران حکومت اور عراقی کابینہ میں شامل سنی نواز پارٹی کی نوری المالکی کے خلاف کھلے عام تنقید کے جلو میں ہو رہے ہیں۔ ان میں ملک کا بڑا تجارتی روٹ تا دیر بند رہا جس کے بعد مجبورا سخت فیصلے کرنا پڑ رہے ہیں۔