.

صدر مرسی نے ڈاکٹر العریان کا مشاورتی کونسل سے استعفی منظور کر لیا

اسرائیلی یہودیوں کو مصر واپسی کی پیشکش العریان کے گلے پڑ گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مصری ایوان صدر کے ترجمان ڈاکٹر یاسر علی نے تصدیق کی ہے کہ ڈاکٹر عصام العریان کا صدر ڈاکٹر محمد مرسی کی ایڈوائزری کونسل سے استعفی منظور کر لیا گیا ہے کیونکہ ترجمان کے بہ قول مسٹر العریان کی پارلیمانی ذمہ داری اور صدر کے لئے مشاورت جیسے دونوں اہم کاموں کو بیک وقت ادا کرنے میں مشکلات پیش آ رہی تھیں۔

یاد رہے کہ ڈاکٹر عصام العریان گزشتہ چند دنوں قبل مصر سے اسرائیل آباد ہونے والے یہودیوں کو اپنے 'اصل وطن' لوٹنے کی پیشکش جیسے بیانات کے بعد میڈیا اور سیاسی حلقوں میں موضوع بحث بنے ہوئے تھے۔

ڈاکٹر یاسر علی کے مطابق مصری وزیر اعظم نئی شکل میں اپنے عہدے پر متمکن ہیں اور یہ کابینہ میں وزراء کی رد و بدل اور نئے افراد کی شمولیت شہریوں کے مفاد میں کی گئی ہے۔ پروگرام 'مساء العاشرہ' میں صحافی وائل الابراشی سے گفتگو کرتے ہوئے ڈاکٹر یاسر علی کا کہنا تھا کہ صدر مرسی نے حالیہ وزارتی تبدیلیوں کی منظوری عوام کو کم سے کم وقت میں زیادہ سے زیادہ سہولت فراہم کرنے کے لئے دی۔ انہوں نے کہا کہ کابینہ میں نئے وزراء کی نامزدگی کسی نظریاتی پہلو سے نہیں بلکہ ان کی اہلیت کو پیش نظر رکھ کر کی گئی ہے۔

جنرل احمد جمال الدین سے وزارت داخلہ کا قلم دان واپس لینے کے بارے میں الابراشی سوال کا ڈاکٹر یاسر علی نے جواب دینے اسے انکار کرتے ہوئے کہ ان کے لئے جنرل احمد کے برطرفی کے اسباب بیان کرنا ممکن نہیں ہے، اس پر وزیر اعظم زیادہ بہتر روشنی ڈال سکتے ہیں۔