.

بغداد میں کار بم دھماکا، تین افراد ہلاک، چودہ زخمی

بس ٹرمینل پر شہریوں پر کار بم حملہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
عراق کے دارالحکومت بغداد میں شہریوں پر کار بم حملے کے نتیجے میں تین افراد ہلاک اور چودہ زخمی ہو گئے ہیں۔

عراقی حکام نے بتایا ہے کہ جمعرات کو بم دھماکا بغداد کے علاقے الحریۃ میں ایک بس ٹرمینل کے نزدیک ہوا ہے۔ایک عینی شاہد کے مطابق وہ اپنے گھر سے نکل رہے تھے کہ اچانک بارود سے بھری ایک کار آئی اوروہ دھماکے سے پھٹ گئی۔دھماکے سے ایک مکان اور متعدد گاڑیوں کو نقصان پہنچا ہے۔

پولیس نے بم دھماکے میں تین افراد کی ہلاکت کی تصدیق کی ہے اور کہا ہے کہ زخمیوں میں خواتین اور بچے بھی شامل ہیں۔زخمیوں کو بغداد کے اسپتال میں منتقل کردیا گیا ہے۔ فوری طور پر کسی گروپ نے بغداد میں اس کار بم حملے کی ذمے داری قبول نہیں کی۔

بغداد میں یہ بم دھماکا ایسے وقت میں ہوا ہے جب عراق کے سنی اکثریتی صوبوں میں وزیر اعظم نوری المالکی کے خلاف گذشتہ ایک ہفتے سے احتجاجی مظاہرے جاری ہیں اور مظاہرین وزیر اعظم سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کر رہے ہیں۔

عراق میں حالیہ مہینوں کے دوران تشدد کے واقعات میں نمایاں کمی واقع ہوئی ہے لیکن ہر ہفتے دو ایک بم دھماکوں کا سلسلہ جاری ہے۔گذشتہ ہفتے دارالحکومت بغداد سے ساٹھ کلومیٹر جنوب میں واقع قصبے مسیّب میں شیعہ زائرین کو بم حملے میں نشانہ بنایا گیا تھا اور کم سے کم بیس افراد ہلاک ہو گئے تھے۔