.

اسرائیل میں پارلیمانی انتخابات کے لیے پولنگ جاری

نیتن یاہو کی قیادت میں اتحاد کی دوبارہ کامیابی کا امکان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
اسرائیل اور اس کے مقبوضہ دریائے اردن کے مغربی کنارے میں قائم یہودی بستیوں میں آج منگل کو پارلیمانی انتخابات کے لیے ووٹ ڈالے جارہے ہیں۔

اسرائیلی پارلیمان الکنیست کی ایک سو بیس نشستوں کے لیے ساڑھے چھپن لاکھ اسرائیلی ووٹ ڈالنے کے اہل ہیں۔اسرائیل اور مقبوضہ مغربی کنارے میں دس ہزار ایک سو بتیس پولنگ اسٹیشن قائم کیے گئے ہیں جہاں پندرہ گھنٹے تک پولنگ جاری رہے گی۔

رائے عامہ کے جائزوں کے مطابق اسرائیلی وزیراعظم کی جماعت لیکوڈ اور سابق انتہا پسند وزیرخارجہ ایویگڈور لائبرمین کی جماعت یسرائیل بیتنو پر مشتمل اتحاد پارلیمان کی ایک سو بیس نشستوں میں سے بتیس سے پینتیس نشستیں جیت جائے گا۔تحلیل ہونے والی پارلیمان میں ان کی بیالیس نشستیں تھیں۔

حزب اختلاف کی بائیں بازو کی جماعت لیبر کی سولہ ،سترہ نشستوں پر کامیابی کا امکان ظاہر کیا گیا ہےدوسری جماعتوں ''جیوش ہوم'' الکنیست کی تیرہ ،چودہ اور آرتھو ڈکس یہود کی جماعت شاس گیارہ ،بارہ نشستیں حاصل کرنے میں کامیاب ہوجائےگی۔یش عطید اور حاتنوح بالترتیب بارہ ،تیرہ اور سات یا آٹھ نشستیں حاصل کرلیں گی۔گیارہ جنوری کو شائع شدہ ایک پول کے مطابق ہر چار میں سے ایک ووٹر نے یہ فیصلہ نہیں کرپایا تھا کہ وہ کس جماعت کے حق میں ووٹ دے گا۔