.

اسرائیلی جنگی طیاروں کی شام،لبنان سرحد پر بمباری

ہتھیاروں کی نامعلوم مقام کی جانب منتقلی روکنے کا دعویٰ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیل کے جنگی طیاروں نے شام اور لبنان کے درمیان واقع سرحد پر مبینہ طور پر ہتھیار لے جانے والے گاڑیوں کے ایک قافلے کو نشانہ بنایا ہے۔

فرانس کے خبررساں ادارے اے ایف پی نے ایک عینی شاہد کے حوالے سے اسرائیل کے فضائی حملے کی اطلاع دی ہے لیکن اس کی شناخت نہیں بتائی۔اس عینی شاہد نے اسرائیلی حملے کی جگہ کی نشاندہی بھی نہیں کی۔

اسرائیلی فوج کی ایک خاتون ترجمان کا کہنا ہے کہ وہ اس رپورٹ کا جائزہ لے رہی ہے۔شام اور لبنان کی سرحد پر ہتھیار لے جانے والی گاڑیوں پر بمباری کی یہ اطلاع انتہا پسند صہیونی وزیراعظم بنجمن نیتن یاہو کے شام کے کیمیائی ہتھیاروں سے متعلق انتباہ کے تین روز بعد سامنے آئی ہے۔انھوں نے کابینہ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ ہمیں اپنے گردوپیش پر بھی نظررکھنی چاہیے۔

اسرائیل نے گذشتہ ہفتے ہی لبنان اور شام کی سرحد کے نزدیک اپنے آئرن ڈوم میزائل دفاعی نظام کو کسی نامعلوم مقام پر نصب کیا تھا۔اسرائیل اس میزائل دفاعی نظام کے ذریعے غزہ کی پٹی سے جنوب کی جانب فائر کیے جانے والے راکٹوں اور ہلکے میزائلوں کو ناکارہ بناتا رہا ہے۔