تیونس کے اپوزیشن رہنما نامعلوم حملہ آوروں کی فائرنگ سے ہلاک

'شکری کا قتل دہشت گردی ہے'

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

میڈیا سے وابستہ تیونسی ذرائع کا کہنا ہے کہ اپوزیشن جماعت متحدہ قومی جمہوری پارٹی کے جنرل سیکرٹری شکری بلعید کو بدھ کے روز نامعلوم مسلح افراد نے اس وقت گولیاں مار کر قتل کر دیا جب وہ اپنے گھر سے دفتر جانے کے لئے نکلے تھے۔

مقتول کے بھائی نے فرانسیسی خبر رساں ایجنسی 'اے ایف پی' سے بات کرتے ہوئے کہا کہ "میرے بھائی کو قتل کر دیا گیا ہے۔ میں بہت زیادہ ٹوٹ پھوٹ اور مایوسی کا شکار ہوں"۔ عبدالمجید بلعید نے 'موزیک' ریڈیو اسٹیشن سے بات کرتے ہوئے کہا کہ میرے بھائی کو گھر کے باہر دو گولیاں لگیں۔"

واقعے پر فوری ردعمل ظاہر کرتے ہوئے تیونسی وزیر اعظم حمادی الجبالی نے کہا کہ بلعید کو گولی کا نشانہ بنایا جانا سیاست اور تیونسی انقلاب کے قتل کے مترادف ہے۔ ابھی تک قاتلوں کا سراغ نہیں لگایا جا سکا۔ تیونس کے ذرائع ابلاغ نے بتایا کہ بلعید کو گھر کے سامنے گردن اور سر میں دو گولیاں لگیں۔

فوری طور پر حملہ آوروں کی شناخت نہیں ہو سکی۔ شکری بلعید تیونس میں اپوزیشن کے سرکردہ رہنما ہیں۔ سابق مفرور صدر زین العابدین بن علی کے اقتدار خاتمے کے بعد وہ ملکی سیاسی منظر نامے میں بڑی عزت و احترام کی نظر سے دیکھے جاتے تھے۔

یاد رہے اپنے ایک حالیہ انٹرویو میں بلعید نے حکمران جماعت تحریک نہضت اسلامی، حکومتی اتحاد میں شامل کانگریس پارٹی کے سلفی جماعتوں سے ملکر انقلاب محافظ لیگ کی تشکیل کے بارے میں خبردار کرتے ہوئے خدشہ ظاہر کیا تھا کہ ملک میں سیاسی مخالفین کو نشانہ بنانے کی کارروائی ہو سکتی ہے۔

تیونس میں صحافی یونین کی صدر نجیبہ الحمرونی نے بلعید کی ہلاکت کو سیاسی قتل قرار دیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ہمیں اپنی زندگی سے زیادہ صحافت کی آزادی عزیز ہے۔ ملک میں متعدد حلقے ہماری تنقید برداشت نہیں کرتے۔ انہوں نے کہا کہ بلعید کے قتل کے محرکات ذاتی نہیں بلکہ سیاسی نوعیت کے ہیں۔

معروف تجزیہ نگار محمد بوعود نے بلعید کے قتل کے حوالے سے العربیہ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ سیاسی رہنما کا قتل ملک میں تشدد کا نقطہ آغاز معلوم ہوتا ہے۔ انہوں نے خبردار کیا کہ ملک میں اسلحے کے گودام بھرے پڑے ہیں۔ ایسی مزید ہلاکتوں کا تانہ بانہ تیار کیا جا چکا ہے۔ بوعود نے خبردار کیا اگر سیاسی قتل و غارت گری کا سلسلہ چل نکلا تو پھر اسے روکنا مشکل ہو جائے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں