.

فوج سیاست سے دور رہے گی: سربراہ مصری فوج

'ملکی حالات کو میڈیا بڑھا چڑھا کر پیش کر رہا ہے'

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصری فوج کے سربراہ میجر جنرل صدقی صبحی صالح نے کہا ہے کہ فوج مصری سیاست سے کلی طور پر دور رہے لیکن ان کا ادارہ ملک کے اندر ہونے والے واقعات پر نظر رکھے ہوئے ہے۔

ان خیالات کا اظہار مصری جنرل نے العربیہ الحدث سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ انقلاب، جمہوریت اور آزادی اظہار کے نتیجے میں مصر میں سیاسی جدوجہد دیکھی جا رہی ہے تاہم جنرل صدقی نے اس بات پر زور دیا کہ اس جدوجہد کی پرامن ریگولیشن کے لئے قواعد و ضوابط بنانا ہوں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ صدر کی جانب سے مذاکرات کی پیشکش کا نتیجہ جلد سامنے آئے گا۔ جنرل صدقی صبحی کے بہ قول مصر کے حالات ٹھیک ہیں تاہم میڈیا انہیں بڑھا چڑھا کر پیش کر رہا ہے۔

مصری چیف آف آرمی سٹاف نے سیناء میں پیش آنے والے معاملات سے متعلق حکومت کی اسٹرٹیجک پالیسی کو سراہتے ہوئے کہا کہ علاقے میں مجرموں کی سرکوبی پولیس کے ذریعے کرائی گئی۔ ان عناصر میں 99 فیصد اس سلاخوں کے پیچھے ہیں۔

غزہ کے ساتھ مصری سرحدی علاقے رفح میں ہلاک کئے جانے والے فوجیوں کے قتل کی تحقیقات کے بارے میں ان کا کہنا تھا کہ اس سلسلے میں تفتیش جاری ہے، یقیناً یہ معاملہ چھوٹا نہیں ہے۔

انہوں نے یہ بات زور دیکر کہی کہ مصری فوج ہمسایہ ملک کے ساتھ سرحد کا دفاع اسی طرح کر رہی ہے جیسے انقلاب سے قبل جاری تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ اگر رفح سرحد پر موجود زیر زمین سرنگوں کی موجودگی ملکی سلامتی کے لئے خطرہ بنیں تو انہیں منہدم کرنے کا سلسلہ دوبارہ شروع کر دیا جائے گا۔