.

مصری عوام انتخاب کا بائیکاٹ کریں: محمد البرادعی

مسیحی بڑے دنوں کی وجہ سے انتخاب مؤخر ہونے کا امکان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کے شکست خوردہ صدارتی امیدوار، 'الدستور' پارٹی کے سربراہ اور اپوزیشن اتحاد نیشنل سالویشن فرنٹ کے کوارڈینیٹر جنرل ڈاکٹر محمد البرادعی نے مصری عوام سے کہا ہے کہ وہ اخوان المسلمون حکومت کی جعلی جمہوریت کا پردہ چاک کرنے کے لئے انتخابات کا بائیکاٹ کریں۔

ہفتے کے روز سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹیوٹر پر اپنے بلاگ میں ڈاکٹر البرادعی نے کہا کہ انتخاب کے مکمل عوامی بائیکاٹ سے جعلی جمہوریت کا پردہ کم سے کم وقت میں چاک کیا جا سکے گا۔

مصری کا داخلی بحران اسی مقام پر پہنچ گیا ہے جہاں یہ حسنی مبارک کو صدارت سے معزول کرنے سے پہلے کھڑا تھا۔ اپوزیشن کے نیشنل سالویشن فرنٹ نے صدر محمد مرسی پر الزام عاید کیا ہے کہ وہ مصری عوام میں تقسیم کو راسخ کر رہے ہیں۔ اس مقصد کے لئے انہوں نے 27 اپریل کو سینٹ انتخاب کا ڈول ڈالنے کا اعلان کیا ہے۔

ادھر صدارتی ذرائع کے حوالے سے گردش کرنے والی خبروں میں کہا گیا ہے کہ ایوان صدر پارلیمانی انتخابات کی تواریخ تبدیل کرنے پر غور کر رہا ہے کیونکہ انہی دنوں میں مسیحی برادری کی عید متوقع ہے۔

ذرائع نے ترک خبر رساں ادارے 'اناطولیہ' کو بتایا یہ انتخابات کی تواریخ میں تبدیلی کا فیصلہ مسیحی رہنماؤں کے ایوان صدر سے رابطے کے بعد کیا گیا ہے۔ مسیحی بڑے دنوں میں سینٹ انتخابات کے اعلان پر کمیونٹی نے سخت غم و غصے کا اعلان کیا ہے۔

انتخابات کے پہلے مرحلے کا آغاز ستائيس اپريل سے ہو گا جو کہ دو روز تک جاری رہے گا۔ اس مرحلے ميں ملک کے ستائيس ميں سے پانچ صوبوں ميں انتخابات کرائے جائيں گے۔ انتخابات کا چوتھا اور آخری مرحلہ انيس تا بيس جون کو منعقد کرایا جائے گا، جس کے بعد چھ جولائی کو نئی پارليمان کا اجلاس طلب کيا جائے گا۔