.

سولہ سعودی، ایک ایرانی اور لبنانی جاسوسی کے الزام میں گرفتار

اہم مقامات کے بارے میں دوسرے ملکوں کو معلومات دے رہے تھے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں حکام کا کہنا ہے کہ ایک ایران، ایک لبنانی اور سولہ سعودی شہریوں کو جاسوسی کے الزام میں گرفتار کیا گیا ہے۔

سعودی وزارتِ داخلہ کے ترجمان نے سرکاری ٹیلی ویژن کو بتایا کہ اٹھارہ مشتبہ افراد’ایک ریاست کے لیے جاسوس کے سیل میں شامل تھے‘۔

وزارتِ داخلہ کے ترجمان منصور الترکی کے مطابق یہ افراد ملک میں تنصیبات اور اہم علاقوں کے بارے میں معلومات حاصل کر کے 'اس' ریاست کی انٹیلی جنس ایجنسی کو فراہم کر رہے تھے۔ تاہم ترجمان نے جاسوسی کے نیٹ ورک کو چلانے والے ملک کا نام نہیں لیا۔

حکام کا کہنا ہے کہ ان افراد کو چار دن پہلے گرفتار کیا گیا تھا اور عدالتی حکام کے حوالے کرنے سے پہلے ان سے تفتیش کی جا رہی ہے۔

وزارتِ داخلہ کی جانب سے جاری ہونے والے ایک علاحدہ بیان میں کہا گیا ہے کہ اٹھارہ مشتبہ جاسوس دارالحکومت ریاض اور مقدس شہر مکہ میں بیک وقت اور ایک منظم آپریشن میں گرفتار کیا گیا۔ بیان کے مطابق گرفتاریاں ملک کے مشرقی صوبے میں بھی کی گئیں ہیں۔

تیل کے ذخائر سے مالامال مشرقی سعودی عرب میں سال دو ہزار گیارہ میں حکومت مخالف مظاہرے شروع ہوئے تھے اور ان مظاہروں میں متعدد افراد ہلاک اور درجنوں زخمی ہو گئے تھے۔