.

شامی رجیم دمشق میں اپنے ہیڈکوارٹرز کی قلعہ بندی کے لیے کوشاں

دارالحکومت کے نواح میں شامی فوج اور باغیوں کے درمیان جھڑپیں جاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے دارالحکومت دمشق کے نواح میں صدر بشارالاسد کی وفادار فوج اور باغی جنگجوؤں کے درمیان جھڑپیں جاری ہیں اور شامی رجیم باغیوں کی پیش قدمی کو روکنے اور خود کو محفوظ بنانے کے لیے اپنے ہیڈکوارٹرز کو قلعہ بند کررہا ہے۔

آن لائن منظرعام پر آنے والی تصاویر کے مطابق شامی حکومت نے دمشق کے وسط میں واقع سکیورٹی ادارے کی عمارت کے باہر ایک حفاظتی دیوار تعمیر کر لی ہے۔ دارالحکومت کے تین علاقوں الجوبر ،القابون اور الحجرالاسود میں باغیوں اور اسدی فوج کے درمیان شدید جھڑپیں جاری ہیں اور باغی دمشق کی جانب پیش قدمی کی کوشش کررہے ہیں جبکہ شامی فوج انھیں روکنے کے لیے مختلف اقدامات کررہی ہے۔

دمشق کے جن علاقوں میں باغی جنگجو موجود ہیں،وہاں شامی فوج جنگی طیاروں اور توپخانے سے گولہ باری کررہی ہے لیکن باغیوں کے بجائے عام شامی شہری ان حملوں کا نشانہ بن رہے ہیں۔سوموار کو شامی فوج نے دمشق کے علاقوں معظمیہ ،داریا ،یلدا اور الدوما پر گولہ باری کی تھی اور الغوطہ الشرکیہ کے علاقے میں بمباری سے متعدد شامی شہری ہلاک اور زخمی ہوگئے تھے۔

درایں اثناء انقلابی رابطہ کمیٹیوں نے اطلاع دی ہے کہ شامی فوج نے صوبہ ادلب کے شہر معرۃ النعمان میں بلا امتیاز بمباری کی ہے جس کے نتیجے میں عورتوں اور بچوں سمیت دس افراد ہلاک ہوگئے تھے۔شامی فوج نے ایک اور قصبے حاس پر بھی بمباری کی ہے۔صوبہ حلب کے قصبوں مسکن، ہنانو اور الشعار میں بھی شامی فوج نے گذشتہ روز قتل عام کا ارتکاب کیا تھا۔