.

قاہرہ:عدالت میں آتشزدگی سے اہم کیسوں کا ریکارڈ جل کر راکھ

حسنی مبارک کے خلاف مظاہرین کی ہلاکتوں کے مقدمے کی فائلیں آگ کی نذر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کے دارالحکومت قاہرہ میں ایک پرائمری عدالت کی عمارت میں اچانک آگ لگ جانے سے اہم کیسوں کی فائلیں آلات اور دیگر سامان مکمل طور پر جل گئے ہیں۔

عدالت کے چئیرمین ہانی عباس نے بتایا ہے کہ عدالت کی عمارت کی تیسری منزل کو آگ لگی تھی اور وہاں سابق صدر حسنی مبارک کے خلاف احتجاجی تحریک اور مابعد واقعات میں مظاہرین کی ہلاکتوں کی تحقیقات سے متعلق فائلیں رکھی ہوئی تھیں۔

انھوں نے بتایا کہ عدالت میں مظاہرین کی ہلاکتوں میں سابق صدر حسنی مبارک کے مبینہ کردار سے متعلق مقدمات کی ریکارڈ بھی موجود تھا۔آتش زدگی کے واقعے میں عدالت کے کمرے میں موجود ریکارڈ ،کمپیوٹرز اور دوسرا سامان سب جل کر راکھ ہوگئے ہیں۔

مصر کے محکمہ شہری دفاع نے عدالت میں لگی آگ پر پا لیا ہے اور حکام نے واقعے کی تحقیقات شروع کردی ہے۔ وزیرانصاف نے بھی جائے وقوعہ کا دورہ کیا ہے اور آگ سے ہونے والے نقصانات کا جائزہ لیا ہے۔فوری طور پر آگ لگنے کی وجہ معلوم نہیں ہوسکی۔