.

نوری المالکی نے پوری قوم سے جنگ مول لے لی ہے: رافع العیساوی

'آمریت' کے خاتمے تک عراق نہ چھوڑنے کا عزم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراقی پارلیمنٹ کے مستعفی وزیر مالیات رافع العیساوی نے عراقی وزیر اعظم نوری المالکی پر تمام ہم وطنوں سے مخاصمت پیدا کرنے کا الزام عاید کیا ہے۔

'العربیہ' نیوز چینل سے بات کرتے ہوئے انہوں نے مزید کہا کہ پیش آئند انتخابات کے نتائج کو 'انجینئر' کرنے کے معاملے پر انہیں انتہائی دکھ ہے۔ انہوں نے بتایا کہ وہ عراقی شہر الانبار میں موجود ہیں اور ان کے اردگرد ہونے والی سرگرمیاں قانونی نہیں بلکہ سیاسی انتقام کا نشانہ بنانے کی کوشش ہے۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے مزید کہا کہ وہ آمریت کے خاتمے اور جعلی مقدمات کے ذریعے سیاسی مخالفین کو نشانہ بنانے والوں کو انجام تک پہنچائے بغیرعراق سے کبھی نہیں چھوڑیں گے۔ عراقی نائب وزیر اعظم صالح المطلک کی حکومت میں دوبارہ شمولیت کے باے میں سوال پر مسٹر العیساوی کا کہنا تھا کہ الملطک نے عوام اور حکومت ایک ہی وقت میں ناراض کر لئے ہیں۔

یاد رہے کہ سابق وزیر مالیات عراقی فوج کے ایک حملے میں اس وقت بال بال بچے جب وہ الانبار کے مغربی شہر الرطبہ جا رہے تھے۔ بہ قول العیساوی ان پر حملہ آور دستوں کو ہیلی کاپٹر سے کور فراہم کیا جا رہا تھا۔ انہوں نے موجودہ وزیر اعطم نوری المالکی کی پالسیوں پر کڑی تنقید کی۔

العیساوی پر مبینہ قاتلانہ حملہ الرمادی کے مغرب میں ہوا، حملے کے وقت عراق رکن پارلیمان احمد العلوانی بھی ان کے ہمراہ تھے، جس کے بعد ان کے قافلے کو رخ الانبار کی طرف موڑ دیا گیا۔ ادھر بیداری فورسسز کے سابق کمانڈر ابو ریشہ کے بھی وارنٹ گرفتاری کئے جانے کی اطلاعات ہیں۔