جیش الحر کے دمشق ائرپورٹ روٹ پر واقع سرکاری اہداف پر حملے

دارلحکومت کی متعدد کالونیوں پر سرکاری فوج کی راکٹ اور گولا باری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

شام میں انسانی حقوق نیٹ ورک کے مطابق دمشق اور گرد و نواح میں 34 بچوں سمیت 112 افراد سرکاری فوج اور حکومت مخالف جنگجوؤں کے درمیان لڑائی میں مارے جا چکے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق جیش الحر نے القلمون کے علاقے میں انجینئرنگ کور کے سٹور کو مقامی ساختہ میزائیلوں سے نشانہ بنایا۔ نیز دمشق کے بین الاقوامی ہوائی اڈے کو جانے والے راستے میں شامی فوج کے ٹھکانوں پر ہاون راکٹ سے حملے کئے گئے۔

ادھر شاہراہ فلسطین میں بلدیہ کمپلیکس اور العباسین اور گوبر کو ملانے والی سڑک پر بھی شدید تصادم کی اطلاع ملی ہے۔ سرکاری فوج نے دمشق کے مضافات میں معضمیہ الشام سمیت متعدد علاقوں پر گولا باری کی۔

تاہم دمشق ہی کے نواحی علاقے بیت سحم میں جیش الحر نے سرکاری فوج کی جانب سے دمشق کے بین الاقوامی ہوائی اڈے کی جانب سے بلدیہ پر حملہ روکا لیا ہے جبکہ درایا، السبینہ اور ببیلا کے علاقوں میں ائر فورس انٹیلیجنس کے دفاتر کے قریب بھی جیش الحر اور سرکاری فوج کے درمیان لڑائی کی اطلاعات ہیں۔

داریں اثنا الطیرا میں کویرس کے فوجی ہوائی اڈے کے آس پاس بھی سرکاری فوج کی گولا باری کا سلسلہ دوبارہ شروع ہو گیا ہے۔ ایسی ہی اطلاعات حلب کے مشرقی علاقے بالخصوص دیر حافر، رسم عبود اور ہوائی اڈے کے قریبی علاقوں سے بھی موصول ہوئی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں