"القصیر میں حزب اللہ کے ساتھ ایرانی بھی لڑ رہے ہیں"

لبنانی عہدیداروں نے بتایا کہ القصیر محاذ کھولنا ایرانی فیصلہ تھا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

شامی اپوزیشن پر مشتمل جیش الحر کا کہنا ہے کہ القصیر کے علاقے میں متعدد دیہات پرسرکاری فوج شدید گولا باری کر رہی ہے۔ دو برس قبل شروع ہونے والی لڑائی کے بعد حالیہ بمباری سب سے زیادہ شدید بیان کی جاتی ہے۔

القصیر میں جیش الحر کے آپریشن کمانڈر بریگیڈئر الرکن فاتح حسون کے مطابق ان کے وائر لیس یونٹس نے علاقے میں بعض افراد کو وائر لیس پرفارسی میں گفتگو کرتے سنا ہے، جس اس بات کی دلیل ہے کہ ان جنگجووں کا تعلق ایران سے ہو سکتا ہے۔

ایسی ہی ایک ملتی جلتی پیش رفت میں شامی حزب اختلاف کے سربراہ جارج صبرا نے بتایا کہ ان کے لبنانی عہدیداروں سے مذاکرات ہوئے ہیں۔ مذاکرات کا محور القصیر میں رونما ہونے والے واقعات تھے۔ انہوں نے بتایا کہ القصیر میں معرکہ آرائی دراصل ایرانی فیصلہ تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں