اسرائیلی فوج کے ہاتھوں گرفتاری سے خوفزدہ فلسطینی نونہالوں کی ویڈیو جاری

شاگرد کی رہائی فلسطینی سکول کی پرنسپل کا صہیونی فوجیوں پر دلیرانہ وار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

مقبوضہ فلسطین میں یہودی آبادکاری کے خلاف سرگرم نوجوانوں کی انجمن نے حال ہی میں ایک ویڈیو جاری کی ہے جس میں اسرائیلی فوج فلسطینی بچوں کو گرفتار کر رہی ہے اور اس موقع پر یہودی آبادکاروں، مقامی باسیوں اور بین الاقوامی رضاکاروں کے درمیان سخت سست جملوں کا تبادلہ بھی دیکھا اور سنا جا سکتا ہے۔ یہ ویڈیو مغربی کنارے کے تاریخی شہر الخلیل کے وسطی علاقے تل الرمیدہ میں بنائی گئی۔

اس ویڈیو کو دیکھ کر اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ فلسطینی بچوں کو دوسرے افراد کی نسبت گرفتار کرنا آسان ہے۔ گرفتاری کے خوف سے ننھے بچوں کے چھرے زرد ہو جاتے ہیں اور ان کی مائیں کسی مادی سہارے کے بغیر اپنے جگر گوشوں کو صہیونی فوج کے ہاتھ گرفتار ہونے سے روکنے کی مقدور بھر کوشش کرتی دکھائی دیتی ہیں۔

ریکارڈ شدہ ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ ایک سکول کی ڈائریکٹر اپنے ایک ننھے طالب علم کو کیسے اسرائیلی فوج کے قبضے سے چھڑا کر لاتی ہیں۔ اسرائیل چھاپے اور غیر انسانی اقدامات فلسطین میں روزمرہ کا معمول بن چکے ہیں۔ مرد اور خواتین تو خود پر ہونے والے ان روزمرہ مظالم کے عادی ہو چکے ہیں تاہم بچوں کو صہیونی مظالم سہنے کی عادت آہستہ آہستہ ہی پڑے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں