.

امریکا اسد مخالف باغیوں کو مسلح کرے: سابق نائب صدرشام کا مطالبہ

شامی حکومت کے پاس کیمیائی ہتھیار ہیں،کسی کو شک نہیں ہونا چاہیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے سابق نائب صدر عبدالحلیم خدّام نے امریکا سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ صدر بشارالاسد کے خلاف برسرپیکار حزب اختلاف کو مسلح کرے۔

انھوں نے جمعہ کو العربیہ کے ساتھ ایک انٹرویو میں کہا کہ ''امریکا کو شام میں فوجی بھیجنے کے بجائے شامی باغیوں کو ہتھیار مہیا کرنے چاہئیں''۔انھوں نے اس خدشے کا اظہار کیا کہ شام میں جاری قتل عام مزید خطرناک صورت اختیار کرسکتا ہے۔

خانہ جنگی کا شکار ملک کے سابق نائب صدر نے دعویٰ کیا کہ ''شامی حکومت کے پاس کیمیائی ہتھیار ہیں اور اس بارے میں کوئی شک نہیں ہونا چاہیے''۔ان کے اس بیان سے ایک روز قبل ہی امریکی صدر براک اوباما نے کہا تھا کہ شام میں کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال کی صورت میں واشنگٹن تمام آپشنز پر غور کررہا ہے۔

اے ایف پی کی اطلاع کے مطابق امریکا نے حال ہی میں شام کے پڑوسی ملک اردن میں اپنے ڈیڑھ سو فوجی ماہرین کی تعیناتی کی اطلاع دی تھی اور امریکی حکومت کے بہ قول اردن میں موجود یہ فوجی شام میں طوائف الملوکی اور ابتری کی صورت میں کیمیائی ہتھیاروں کو محفوظ بنانے میں مدد دیں گے کیونکہ ان خطرناک ہتھیاروں کے بارے میں ان خدشات کا اظہار کیا جاتا رہا ہے کہ وہ صدر بشارالاسد کی حکومت کے خاتمے بعد اس سے برسرپیکار اسلامی جنگجوؤں کے ہاتھ لگ سکتے ہیں۔