.

اقوام متحدہ کا اسرائیل سے لبنانی حدود کی خلاف ورزیوں پر احتجاج

لبنان کی فضائی حدود سے گذر کرشام پر اسرائیلی فضائی حملے بند کرنے کا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اقوام متحدہ نے اسرائیل سے لبنان کی فضائی حدود میں جنگی طیاروں کی پروازوں پر احتجاج کیا ہے اور اس سے جنگی طیاروں کی نقل وحرکت بند کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

اقوام متحدہ کے ترجمان مارٹن نیسرکی نے منگل کو نیویارک میں نیوزبریفنگ میں کہا ہے کہ لبنان میں تعینات اقوام متحدہ کی عبوری فورس (یونیفل) نے اس ملک کی فضائی حدودو میں اسرائیل کی پروازوں میں حالیہ اضافے پراحتجاج کیا ہے۔

ترجمان نے یونیفل کے حوالے سے بتایا ہے کہ اس نے گذشتہ ایک ہفتے کے دوران اسرائیل کی جانب سے لبنان کی فضائی حدود کی متعدد مرتبہ خلاف ورزی مشاہدہ کی ہے۔

انھوں نے کہا کہ لبنان کی فضائی حدود میں اسرائیلی پروازیں لبنان کی خودمختاری اور اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قرار داد نمبر 1701 کی خلاف ورزی ہیں۔واضح رہے کہ اس قرار داد کے تحت 2006ء میں اسرائیل اور لبنان کے درمیان جنگ بندی ہوئی تھی۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ ''ہم اس معاملے میں لبنانی حکومت کی تشویش سے آگاہ ہیں۔اقوام متحدہ کی عبوری فورس نے اسرائیل کی مسلح افواج سے اس ضمن میں شدید احتجاج کیا ہے اور اس سے کہا ہے کہ وہ لبنان کی فضائی حدود کی خلاف ورزیوں کا سلسلہ بند کرے''۔

اسرائیل کے جنگی طیاروں نے گذشتہ جمعہ اور اتوار کو شامی دارالحکومت دمشق کے نواح میں فضائی حملوں میں تین اہم فوجی تنصیبات کو نشانہ بنایا تھا اور اس حملے میں صدارتی محل کے نزدیک تعینات بیسیوں ایلیٹ فوجی مارے گئے تھے۔اسرائیلی طیاروں نے ایک فوجی تنصیب ،ایک اسلحہ ڈپو اور طیارہ شکن یونٹ پر حملے کیے تھے۔اسرائیلی فوج نے شام پر ان حملوں کے لیے لبنان کی فضائی حدود کی متعدد مرتبہ خلاف ورزی کی تھی۔