قاہرہ میں سیکڑوں افراد کا مظاہرہ،صدر مرسی سے استعفے کا مطالبہ

متفقہ آئین کی تشکیل اور صدارتی انتخابات کے قبل از وقت انعقاد کے لیے ریلی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

مصر کے دارالحکومت قاہرہ میں سیکڑوں افراد نے احتجاجی مظاہرہ کیا ہے اور انھوں نے صدر محمد مرسی سے مستعفی ہونے اور انتخابات جلد کرانے کا مطالبہ کیا ہے۔

صدر مرسی کے خلاف احتجاجی ریلی کی اپیل محمد البرادعی کی جماعت الدستور اور چھے اپریل تحریک کے علاوہ حزب اختلاف کے مختلف گروپوں نے کی تھی۔ان جماعتوں سے تعلق رکھنے والے کارکنان قاہرہ کے مختلف حصوں سے احتجاج کرتے ہوئے میدان التحریر پہنچے اور انھوں نے وہاں اپنے مطالبات کے حق میں نعرے بازی کی۔

انھوں نے بڑے بڑے بینرز اور پلے کارڈز اٹھا رکھے تھے جن پر قبل از وقت صدارتی انتخابات کرانے اور مصر کے لیے ایک متفقہ آئین کے مطالبات درج تھے۔مظاہرین میں ایک باغی گروپ ''تمرد'' سے تعلق رکھنے والے شرکاء بھی شامل تھے۔مصری میڈیا کی اطلاع کے مطابق مظاہرے سے قبل میدان التحریر کے نزدیک واقع وزارت داخلہ کے باہر سکیورٹی فورسز کی نفری بڑھا دی گئی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں