.

بشار الاسد حکومت دمشق میں 'کیمیاوی اسلحہ' استعمال کر رہی ہے

جیش الحر نے در اندازی کے مرتکب حزب اللہ کے 7 ارکان ہلاک کر دیئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام میں سرگرم حکومت مخالف رضارکاروں نے ایک مرتبہ پھر بشار الاسد پر الزام عاید کیا ہے کہ ان کے حواری دمشق کی العسالی اور ادلب کی سراقب کالونیوں میں کیمیاوی اسلحہ استعمال کر رہے ہیں۔ العربیہ ٹی وی کے مطابق رضاکاروں نے وثوق سے دعوی کیا ہے اس اسلحے کے استعمال سے متعدد ہلاکتیں بھی رونما ہوئی ہیں۔

شامی میڈیا سینٹر کے مطابق دمشق کی العسالی کالونی پر سرکاری فوج کی حالیہ راکٹ باری میں ایسا اسلحہ استعمال کیا گیا ہے کہ جس کے بارے میں دعوی کیا جاتا تھا کہ اس میں کیمیاوی مواد شامل ہے۔

ادھر مقامی کوارڈی نیشن کمیٹیوں نے دعوی کیا ہے کہ حمص کے نواحی شہر القصیر میں البساتین ریجن میں دراندازی کے مرتکب حزب اللہ کے سات جنگجو جیش الحر کی کارروائی میں ہلاک ہو گئے۔

جمعہ کے دن کوارڈی نیشن کمیٹیوں کے جاری کردہ اعداد و شمار میں بتایا گیا ہے کہ ملک کے طول و عرض میں خواتین اور بچوں سمیت ایک سو تیرہ افراد قتل ہوئے۔ کمیٹیوں کے مطابق گزشتہ روز شامی فوج نے ملک کے طول و عرض میں 323 مقامات پر گولا باری کی۔ جمعہ کے روز سب سے زیادہ تیز گولا باری دمشق کے نواح میں یبرود کے علاقے میں ہوئی۔

درایں اثنا شام کی جنرل انقلاب کونسل نے بتایا ہے کہ سرکاری نے متعدد رہائشی کالونیوں پر فاسفورس ہیڈ سے لدے میزائل فائر کئے ہیں۔