.

حزب اللہ جنگجووں نے القصیر مسجد پر 'علم' لہرا دیا

اپوزیشن کا آخری ٹھکانا بویدا بھی شامی فوج نے آزاد کرا لیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لبنان کی شیعہ ملیشیا حزب اللہ شام کے سرحدی شہر القصیر کا کنڑول حاصل کرنے کے بعد شہر کی ایک مسجد پر 'یا حسین' کے الفاظ پر مشتمل 'علم' لہرا دیا ہے۔ علم لہرانے کی امیچور ویڈیو سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر رضاکاروں نے اپ لوڈ کر دی۔

العربیہ نیوز چینل کی رپورٹ کے مطابق حزب اللہ جنگجووں کا یہ اقدام شام کی خانہ جنگی میں فرقہ واریت کے بڑھتے ہوئے اثرات کی منہ بولتی تصویر ہے۔

شام میں شیعہ اسلام کی پیروکار علوی اقلیت حکمران ہے۔ صدر بشار الاسد اپنی حکومت کے خلاف سرگرم سنی مسلک باغیوں کو بنیاد پرست دہشت گرد کہتے ہیں۔

ویڈیو کے منظر عام آنے سے پہلے شامی حکومت نے دعوی کیا تھا کہ انہوں نے حزب اللہ جنگجووں کی مدد سے شام کے وسطی شہر القصیر میں اپوزیشن کے آخری ٹھکانے بویدا گاوں کا کنڑول بھی حاصل کر لیا ہے۔

فرانسیسی خبر رساں ایجنسی 'اے ایف پی' نے شام کے سرکاری ٹی وی کے حوالے سے ہفتے کو بتایا کہ "شام کی فوج بطل نے مشرقی بویدا میں امن و امان بحال کر دیا ہے۔

خبر رساں ادارے کے مطابق القصیر میں شامی فوجی اور باغیوں کے درمیان لڑائی کے دوران ہزاروں افراد بویدا میں پناہ لینے پر مجبور ہو گئے تھے۔ اس گاوں کو پہلے ہی شامی فوج نے باغیوں سے آزاد کرا لیا تھا۔