.

امریکا ایف 16 طیارے اور میزائل شکن بیڑیاں عمان رہنے دے: اردن

درخواست کا مقصد اردن کی فوجی صلاحیت میں بہتری لانا ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اردن حکومت کے وزیر اطلاعات اور ترجمان محمد المومنی نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ عمان نے واشنگٹن سے مطالبہ کیا ہے کہ رواں ماہ جاری مشقوں کے اختتام پر اپنے ایف سولہ لڑاکا فالکن طیارے اور پیڑیاٹ میزائل اردن ہی میں رہنے دے۔

اردن کی سرکاری خبر رساں ایجنسی نے محمد المومنی کا بیان نقل کیا ہے جس میں وزیر اطلاعات نے بتایا کہ اردن نے امریکا سے درخواست کی ہے کہ وہ عمان میں 'چوکش شیر' کوڈ نام سے جاری جنگی مشقوں میں شامل اپنا بعض اسلحہ جن میں پیڑیاٹ میزائل اور ایف سولہ لڑاکا جہاز سرفہرست ہیں، انہیں اردن ہی میں رہنے دیں۔ بہ قول المومنی امریکی اسلحہ اردنی فوج کی انتظامی نگرانی میں رہے گا اور اسے استعمال کرنے کے لئے عمان کی فوج کو امریکا کا فنی تعاون عندالطلب ملتا رہے گا۔

نامور دفاعی تجزیہ کار جنرل ریٹائرڈ صالح المعایطہ نے 'العربیہ" نیوز چینل سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اردن کا امریکا سے اپنی پیڑیات بیٹریاں اور ایف سولہ طیارے ملک میں رہنے دینے سے متعلق درخواست عمان کا بنیادی حق ہے کیونکہ دونوں ملکوں کے درمیان موجود معاہدے انہیں اس طرح کے مطالبے کا حق دیتے ہیں۔ نیز عمان اور واشنگٹن کے درمیان فوجی تعاون پہلے سے موجود ہے۔

انہوں نے کہا کہ جنگی مشقوں کے بعد امریکی اسلحے کی اردن میں موجودگی کا مطلب یہ نہیں کہ عمان، شامی تنازع میں مداخلت کرنا چاہتا ہے کیونکہ اردن ماضی میں یہ بات دو ٹوک الفاظ میں بیان کر چکا ہے کہ اردن اپنی سرزمین کسی ملک کے خلاف فوجی کارروائی میں استعمال نہیں ہونے دے گا۔ مملکت اردن، دوسرے ملکوں میں عدم مداخلت کی پالیسی پر کاربند ہے۔