.

شامی باغیوں نے فضائی دفاعی میزائل نظام حاصل کر لیا

جیش الحر کو طاقت کا توازن تبدیل کرنے والے ہتھیار مل گئے ہیں:سلیم ادریس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے باغی جنگجوؤں اور فوجیوں پر مشتمل جیش الحر(ایف ایس اے) کو روسی ساختہ فضائی دفاعی میزائل نظام مل گیا ہے۔

اس بات کا انکشاف ایک باخبر ذریعے نے العربیہ سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ہے۔فوری طور پر یہ واضح نہیں ہوا کہ جیش الحر کو روسی ساختہ جدید میزائل شکن فضائی دفاعی نظام کہاں سے ملا ہے کیونکہ یہ نظام تو روس نے شامی صدر بشارالاسد کی حکومت کو فروخت کرنا تھا اور ابھی تک اس کی شام کو ترسیل کی تصدیق نہیں ہوئی ہے۔

اس سے پہلے العربیہ اور رائیٹرز نے جیش الحر کی فوجی کمان کے سربراہ سلیم ادریس کا ایک بیان نقل کیا تھا جس میں انھوں نے انکشاف کیا تھا کہ انھیں ایسے ہتھیار مل گئے ہیں جن سے برسر زمین طاقت کا توازن تبدیل ہوجائے گا۔

جیش الحر کے سربراہ ماضی میں متعدد مرتبہ عالمی برادری سے ہتھیار مہیا کرنے کا مطالبہ کرچکے ہیں۔قبل ازیں انھوں نے العربیہ کے ساتھ ایک انٹرویو میں کہا تھا کہ اگر امریکا باغیوں کو اسلحہ مہیا کرے تو وہ چھے ماہ میں شامی حکومت کا خاتمہ کردیں گے۔

انھوں نے کہا کہ ''اگر ہمیں اسلحے کی تھوڑی بہت کمک ملتی ہے تو ہم ایک طویل عرصے تک اپنی جنگ جاری رکھ سکتے ہیں لیکن اگر ہمیں اسلحے کے ساتھ مناسب تربیت بھی مل جاتی ہے اور ہم منظم ہوجاتے ہیں تو میرے خیال میں ہم چھے ماہ میں رجیم کا تختہ الٹ دیں گے''۔

جیش الحر کے سیاسی اور میڈیا کوآرڈی نیٹر لوئی المقداد نے فرانسیسی خبررساں ادارے اے ایف پی کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے تصدیق کی ہے کہ باغیوں کو فوجی امداد مل گئی ہے۔ان میں جدید ہتھیار اور وہ اسلحہ شامل ہے جن سے ان کے بہ قول برسرزمین جنگ کا نقشہ تبدیل ہوسکتا ہے۔

ترجمان نے کہا کہ ہم اس اسلحے کو اگلے محاذوں پر تقسیم کررہے ہیں اور اس کو پیشہ ور افسروں اور جنگجوؤں کو دیا جائے گا۔انھوں نے کہا کہ اسلحے کو بشارالاسد کی حکومت کے خاتمے کے لیے استعمال کیا جائے گا۔اس کے بعد اس کا اکٹھا کر لیا جائے گا کیونکہ ہم نے اسلحہ اور ہتھیار مہیا کرنے والے ممالک سے اس کا وعدہ کیا ہے۔

تاہم جنرل سلیم ادریس اور جیش الحر کے ترجمان نے یہ نہیں بتایا کہ یہ اسلحہ کس ملک یا ممالک نے انھیں بھیجا ہے۔امریکا نے گذشتہ ہفتے شام میں کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال کے نئے شواہد سامنے آنے کے بعد صدر بشارالاسد سے برسرپیکار باغی جنگجوؤں کو اسلحہ مہیا کرنے کا اعلان کیا تھا۔